مودی سرکار خوفزدہ، پاکستانی طلبا کو دہشتگرد قرار دینے کا ڈرامہ فلاپ
26 نومبر 2018 (18:36) 2018-11-26

لاہور :قصور میں گنڈا سنگھ بارڈر کی سیر کو گئے 2 پاکستانی شہریوں کی تصویروں نے بھارتیوں کی نیندیں اڑادیں، بھارت نے دو طالب علموں کو دہشتگرد قرار دے کر اپنے شہریوں کو ڈرانا شروع کر دیا، بھارتی میڈیا بھی اس پروپیگنڈے میں پیش پیش آ گیا ، دونوں پاکستانی طالبعلموں کی تصویروں کے پوسٹر بنا کر پورے دہلی میں چپساں کر دیئے گئے ۔

تفصیلات کے مطابق فیصل آباد کے دو شہری گنڈا سنگھ بارڈر گئے اور اپنی تصویر بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دی، یہ تصویر اس سنگ میل پر بنائی گئی جس پر دہلی 360 کلومیٹر اور فیروز پور 9 کلو میٹر درج ہے۔تصویر دیکھتے ہی بھارت کی خفیہ ایجنسیوں اور پولیس کی دوڑیں لگ گئیں، بھارت نے تصویر کو اٹھایا اور پروپیگنڈا شروع کر دیا، پولیس نے جگہ جگہ پوسٹر چسپاں کر دیئے۔بھارتی میڈیا نے بھی پاکستانی نوجوانوں کو دہشت گرد قرار دے کر اپنی عوام کو الو بنانا شروع کر دیا، دونوں نوجوان فیصل آباد کے ایک مدرسے میں زیر تعلیم ہیں۔

دوسری طرف جامعہ اسلامیہ امدادیہ کے طلباءنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے خبر سنی تو مجھے یقین ہی نہیں آرہا تھا، ہمیں لگا کہ یہ فوٹو ایڈٹ ہیں لیکن دوستوں نے بتایا کہ اس طرح کی اور بھی ویڈیوز یوٹیوب پر موجود ہیں، ویڈیوز دیکھنے کے بعد گھر والوں سے رابطہ کیا گیا گھر والوں نے کہا مطمن ہوکر تعلیم حاصل کرتے رہیں، ہمارا مقصد تعلیم حاصل کرنا ہے، سیروتفریح میں ہم نے کوئی تصویر بنا دی ہے تو اس میں کیا مضائحقہ ہے۔

اس پر پورے ملک کو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی، یہ تصویر 9، 10، 11نومبر کو رائیونڈ اجتماع کے دوران لی گئی تھی ہم نے بارڈر پر پریڈ دیکھنے کیلئے چلے گئے ۔ ہم نے پریڈ دیکھنے کے بعد مائل سٹونز کے پاس کھڑے ہوکر ہم نے تصویر بنائی۔ انڈیا نے ٹوپی پہنے مدرسے کے طلباءکے خلاف پروپیگنڈا کیا ہے تو اس پر معافی مانگنی چاہیے۔


ای پیپر