نوازشریف نے منی لانڈرنگ کی تو سزا بھی ہونی چاہیے ،جاوید ہاشمی

26 مارچ 2018 (22:26)

اسلام آباد: سینئر سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے دور میں سب سے زیادہ کرپشن فوجی ادارے میںہوئی ،مجھے عمران خان نے کہا کہ اسمبلی توڑ دی جائے گی ، سپریم کورٹ دو سے تین ماہ تک حکومت کرے گی، چوہدری نثار کا یہ کہنا کہ وہ مریم نواز کی سربراہی میں کام نہیں کریں گے ایک مختلف بات ہے ، یہ ہمارے ہی بچے ہیں،چوہدری نثار کا بیانیہ نوازشریف کے معاملے پر مختلف ہے، چوہدری نثار کا بیانیہ نوازشریف کے معاملے پر مختلف ہے ،پی ٹی آئی میں پھوٹ پڑ چکی ہے ، نوازشریف نے اگر منی لانڈرنگ کی ہے تو ان کو سزا ہونی چاہیے ، میں احتساب پر یقین رکھتا ہوں، فوج کے پاس بندوق ہے ، ہم ان سے لڑ نہیں سکتے اور ہم اپنی فوج سے کیوں لڑیں ، ہم ان کے جوتوں پر قربان ہونے والے ہیں ،وہ ملک اورحکومت چلانے کی بات کرتے ہیں، چوہدری نثار کے پاس ٹکٹ ہی نہیں ہے وہ ٹرین پر کیسے بیٹھیں گے،نیب میں 90فیصد لوگ خفیہ اداروں سے لائے گئے ہیں ۔

پیر کو نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی نے کہا کہ چوہدری نثار کا بیانیہ نوازشریف کے معاملے پر مختلف ہے ، فوج کے پاس بندوق ہے ، ہم ان سے لڑ نہیں سکتے اور ہم اپنی فوج سے کیوں لڑیں ، ہم ان کے جوتوں پر قربان ہونے والے ہیں ،وہ ملک اورحکومت چلانے کی بات کرتے ہیں ، میں ایسی حکومت کے حق میں نہیں ہوں ، چوہدری نثار ہمیشہ کم افراد کی میٹنگ چاہتے تھے جو بند کمرے میں ہو، میں ایسی میٹنگ کے خلاف ہوں ، مجھے نہیں معلوم کہ چوہدری نثار کے پاس کون سے راز ہیں ، چوہدری نثار بہت اچھی رائے دیتے تھے جس سے مسلم لیگ (ن) کو فائدہ ہوا، میں کہتا ہوں کہ پارٹیاں صرف اقتدار کے لئے نہیں ہوتیں بلکہ حزب اختلاف کےلئے بھی ہوتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ چوہدری نثار کا یہ کہنا کہ وہ مریم نواز کی سربراہی میں کام نہیں کریں گے ایک مختلف بات ہے ، یہ ہمارے ہی بچے ہیں،چوہدری نثار غصے میں ایسے باتیں کردیتے ہیں ۔ چوہدری نثار کے پاس ٹکٹ ہی نہیں ہے وہ ٹرین پر کیسے بیٹھیں گے جبکہ میرے پاس تو ٹکٹ ہے ، میں نے ٹکٹ کےلئے کبھی اپلائی نہیں کیا ، میاں نوازشریف نے خود مجھے کہا کہ میں آپ کو عزت واحترام سے ٹکٹ پیش کر رہا ہوں ۔ مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا کہ میں نے نوازشریف سے ملاقات کرتے ہوئے کہا کہ میاں صاحب آپ نے مجھے کیوں نکالا ، میرے موقف کی تائید دوسروں نے بھی کی ، مجھ سے مسلم لیگ (ن) چھڑوائی گئی، میاں صاحب نے جواب میں کہا کہ ایسی کوئی بات نہیں ، مجھے نکالنے میں چوہدری نثار کا بھی کردار ہے ، میں کبھی وزیراعظم اور وزیراعلیٰ نہیں بننا چاہتا ، میں ایک ورکر ہوں جبکہ چوہدری نثار نے متعدد مرتبہ ایم پی اے کا الیکشن لڑا، ہماری عدلیہ کبھی آزاد نہیں ہے ، یہ بات عدلیہ کے ججز بھی یہ کہتے ہیں ،عمران خان نے نوازشریف کے فیصلے پر کہا کہ یہ کمزور فیصلہ ہے ، چیف جسٹس خدا کےلئے سپریم کورٹ کا وقار برقرار رکھیں ، چوہدری نثار اگر نوازشریف سے کہتے ہیں کہ اداروں سے نہ لڑیں تو وہ درست کہتے ہیں، عدلیہ نے ہی ذوالفقار علی بھٹو سزا دی ۔

انہوں نے کہا کہ ضیاءالحق نے کس طرح دس برس انتخابات مو¿خر کئے میں جانتا ہوں ، نیب میں 90فیصد لوگ خفیہ اداروں سے لائے گئے ہیں ، نیب کے 90فیصد لوگوں نے پیسے کمائے ہیں ، پرویز مشرف کے دور میں سب سے زیادہ کرپشن فوجی ادارے میںہوئی ، دوسرے نمبر پر سیاستدان ہیں اور تیسرے نمبر پر بیورو کریٹ ہیں ، مشرف کے کسی ساتھی پر کرپشن کے مقدمات نہیں بنائے گئے ، میں نے عمران خان کو بچایا ہے ، اگر جنرل عمر خان نے دوسری پارٹیوں کو پیسہ دے کر خریدا ،جیل میں رہنے والے جیت جاتے ہیں ، مجھے عمران خان نے کہا کہ اسمبلی توڑ دی جائے گی ، سپریم کورٹ دو سے تین ماہ تک حکومت کرے گی ، اگر تمام سیاسی رہنما گھر بھیج دیے جائیں تو کیا ہوگا ، پی ٹی آئی میں پھوٹ پڑ چکی ہے ، نوازشریف نے اگر منی لانڈرنگ کی ہے تو ان کو سزا ہونی چاہیے ، میں احتساب پر یقین رکھتا ہوں ۔جاوید ہاشمی نے کہا کہ پرویز خٹک نے مصطفی کھر کو پارٹی میں شامل کرایا ۔

مزیدخبریں