آئندہ الیکشن 2018نوجوانوں کے مستقبل کا فیصلہ کرے گا :عمران خان
26 مارچ 2018 (16:13) 2018-03-26

 ایبٹ آباد :چیئرمین تحریک انصاف کا کارکنوں سے خطاب کے دوران کہناتھا کہ 2018کا الیکشن نوجوانوں کے مستقبل کا فیصلہ کرے گا ۔کپتان نے نعرے لگاتے ہوئے کہا کہ گلی گلی میں شور ہے سارا ٹبر چور ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہرسال ایک ہزار ارب کی چوری کی جارہی ہے ۔جو پیسہ ہسپتالوں پر خرچ ہونا چاہیے وہ ملک سے باہر لے جایا جا رہاہے ۔خیبر پختونخوا سب سے پر امن صوبہ ہے ۔ن لیگ حکومت نے کبھی کوشش نہیں کی کہ بچے سکولوں میں جا نا شرو ع کریں۔

30سال سے جو ملک کو ٹھیک نہیں کر سکے وہ اب کیا کریں گے ۔زرداری نواز شریف فضل الرحمن پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا ایسے لوگوں کے ہوتے ہوئے یہودیوں کی سازش کی ضرورت نہیں ۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کہتا ہے کہ میرا لیڈر نواز شریف ہے ۔ایسے لیڈر کے ہوتے ہوئے شرم سے ڈوب مرنا چاہے ۔ عمران خان نے پالیسی بیان دیتے ہوئے کہا کہ آئندہ عدالتوں میں ایک سال سے زیادہ کیس نہیں چلے گا ۔

چئیرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ نیب کو چیلنج کرتا ہوں کہ خیبرپختون خوا میں کرپشن پر کسی کو پکڑسکتی ہے تو پکڑ کر دکھائے۔مانسہرہ میں ممبر سازی مہم کے دوران کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ عوام سے مل کر مافیا کو شکست دیں گے، نوازشریف کہتے پھررہے ہیں مجھے کیوں نکالا، نوازشریف نے ملک کا پیسہ چوری کرکے باہر بھیجا اس لیے نکالا۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیرخزانہ چوری کرکے باہر بھاگا ہوا ہے، ملک کا پیسہ چوری کرکے باہر بڑے بڑے محلات خریدے گئے اور حکمرانوں کے بچے ارب پتی بن گئے تاہم آئندہ انتخابات میں فیصلہ ہو گا کہ کرپٹ نظام چلے گا یا نیا پاکستان بنے گا ۔

چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ شہباز شریف کہتے ہیں کہ ہر شہر کو لاہور بنا دوں گا ، شہباز شریف جتنی رقم لاہور پر ہر سال خرچ کرتے ہیں، اتنا تو پورے خیبر پختونخوا کا سالانہ بجٹ ہے۔ انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں 5 سال میں غربت آدھی ختم ہوگئی، صوبے میں پولیس، اسپتالوں اور بلدیات کا نظام بہتر ہے جب کہ نیب کو چیلنج کرتا ہوں خیبر پختونخوا میں کسی کو پکڑ سکتی ہے تو پکڑے۔اس سے قبل سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر عمران خان کا کہنا تھا کہ ا?ڈٹ میں راولپنڈی، اسلام آباد میٹرو منصوبے میں کرپشن اور بے ضابطگیاں سامنے آئیں، آڈٹ اعتراضات کے باوجود اسپیشل ڈیپارٹمنٹل کمیٹی نے بہت سے کیسز جبراً دبا دیے۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں “گڈ گورننس” کی حقیقت سمجھنے کے لیے یہ کافی ہے، پنجاب حکومت کے جس بھی منصوبے کو ہاتھ لگائیں وہ کرپشن میں لتھڑا ہوا ملے گا ۔


ای پیپر