پنجاب کے سات شہروں میں 5 دن کلاسز بحال نہ کرنے کا فیصلہ
سورس:   فائل فوٹو
26 فروری 2021 (18:10) 2021-02-26

لاہور: عالمی وبا کے پیش نظر پنجاب کے سات شہروں میں پانچ دن کلاسز بحال نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور لاہور سمیت سات شہروں کے اسکولوں میں 50 فیصد طلبا کی حاضری پالیسی کو برقرار رکھا جائے گا۔ 

محکمہ اسکول اینڈ ایجوکیشن پنجاب کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق 31 مارچ تک 50 فیصد طلبا کی حاضری پالیسی برقرار رہے گی۔ ی نوٹیفکیشن کے مطابق گجرات، لاہور، ملتان، رحیم یار کے اسکولز میں 50 فیصد طلبا ہی آئیں گے۔ سیالکوٹ، راولپنڈی اور فیصل آباد میں بھی متبادل دن کلاسز برقرار رہیں گی۔

نوٹیفکیشن کے مطابق کورونا کے باعث 100 فیصد طلبا کی حاضری کی اجازت نہیں ہے۔ کورونا کیسز کی مثبت شرح والے شہروں میں 50 فیصد طلبا ہی آئیں گے۔

گزشتہ روز وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے اعلان کیا تھا کہ کورونا کی وجہ سے بعض بڑے شہروں میں اسکولوں پر کلاسز کو چھوٹے گروہوں میں تقسیم کر کے پڑھانے کی پابندی کو 28 فروری سے ختم کیا جائے گا

انہوں نے کہا تھا کہ یکم مارچ سے پورے ملک میں تمام اسکولز معمول کے مطابق کھلیں گے۔ 50 فیصد بچوں کو بلانے کی پابندی 28 فرور ی کو ختم ہوجائے گی۔ ملک میں تمام سکول یکم مارچ سے 5 دن کلاسز کے معمول پر واپس چلے جائیں گے۔

عالمی وبا کے باعث گزشتہ برس 15 مارچ سے تمام تعلیمی ادارے بند کر دیے گئے تھے جبکہ سندھ میں 26 فروری کو پہلا کیس سامنے آنے کے بعد سے ہی تعلیمی ادارے بند تھے۔

چھ ماہ کی طویل بندش کے بعد تعلیمی اداروں کو 15 ستمبر کو دوبارہ کھولا گیا تاہم وبا کی دوسری لہر کے باعث انہیں 26 نومبر کو دوبارہ بند کر دیا گیا تھا۔ یکم فروری سے ملک بھر کے تعلیمی اداروں میں سرگرمیاں بحال کی گئی تھیں اور حکومت نے تعلیمی اداروں میں کورونا ایس او پیز پر عملدرآمد لازمی قرار دیا تھا۔


ای پیپر