World Economic Forum, Pakistan, Imran khan
کیپشن:   فوٹو/فائل
25 نومبر 2020 (19:39) 2020-11-25

لاہور : سی پیک کے ذریعے پاکستان کو چین جیسی بڑی منڈی تک رسائی ملی۔ وزیراعظم عمران خان نے وزیراعظم عمران خان کا عالمی اقتصادی فورم " پاکستان اسٹریجی ڈائیلاگ "سے خطاب کرتے ہوئے کہ عالمی وبا کی پہلی لہر کے بعد عوام نے احتیاط کا دامن چھوڑ دیا تھا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان کی معیشت مستحکم اور درست سمت میں گامزن ہے۔ عالمی وبا کی وجہ سے دنیا کی  معیشت متاثر ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے وبا کے کنٹرول کے ساتھ ساتھ لوگوں کو بھوک سے بھی بچایا ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستا ن کا 80 فیصد مزدور طبقہ غیر روایتی  شعبوں سے وابستہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ دنیا کے مقابلے میں ہم  نے اسمارٹ لاک ڈاؤن کو ترجیح دی جس سے  یومیہ اجرت والو ں کو بھی تحفظ فراہم  کیا۔ 

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ عالمی وبا کی پہلی لہر  میں ہم نے تعمیرات کے شعبے   کو کھولا جس سے  ڈیڑھ کروڑ افراد کو مالی امداد دی ۔ اقدامات کے ذریعے معیشت کو کورونا کے اثرات سے بچایا۔ وزیراعظم عمران خان نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اندازہ نہیں کہ عالمی وبا کی دوسری لہر کس حد تک متاثر کرسکتی ہے اور اسی لیے ہم نے غیر ضروری  عوامی اجتماعات پر پابندی عائد کی ہے  ۔ 

وزیراعظم عمران خان نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ اقتدار سنبھالنے کے بعد مالیاتی خسارے سمیت    2 بڑے چیلنجز کا سامنا تھا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت میں درآمدات میں کمی اوربرآمدات کو فروغ دیا گیا جس سے وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ملکی معیشت مستحکم  ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت میں آنے کے بعد ہم نے غیر قانونی ذرائع سے رقوم کی بیرون ملک  منتقلی کو روکا۔ جس سے 17 سال بعد کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ سرپلس ہوا۔

ماضی میں روپے کومصنوعی طریقے سے  مستحکم رکھنے سے برآمدات متاثر ہوئیں۔ لیکن ہم نے ایسا کو کوئی کام نہیں کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں ٹیکسٹائل  انڈسٹری اپنی پوری استعداد کےساتھ چل رہی ہے ۔ 

وزیراعظم عمران خان نے سی پیک کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک ملکوں کے درمیان روابط کے فروغ کا منصوبہ ہے۔ اور اب سی پیک کے دوسرے مرحلے  میں اقتصادی  زونز کے قیام پر توجہ دی جارہی ہے ۔ وزیراعظم عمران خان نےامید کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک کے ذریعے  پاکستان   کو چین کی بڑی منڈی تک رسائی  حاصل ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت ریلوے کو بھی  اپ گریڈ کیا جارہا ہے ۔ 

عمران خان نے مزید کرتے ہوئے  کہا کہ پاکستان اپنے اسٹریٹجی محل وقوع کی وجہ سے ہمسایہ ملکوں کیلئے مرکز بنے گا۔ عمران خان نے کہا کہ اس سلسلے میں پاکستان نے عالمی امن کے قیام کیلئے اپنا کردار ادا کرنا شروع بھی کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغان امن عمل کیلئے پاکستان کلیدی  کردار ادا کررہا ہے۔  افغانستان میں امن سے پاکستان کے قبائلی علاقوں کو  فائد  ہ ہوگا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ افغانستان میں امن سے  خطے  میں امن ہوگا۔ 

عمران خان نے کہا کہ افغانستان میں امن کا قیام ڈونلڈ ٹرمپ کی اہم کامیابیوں میں سے ایک کامیابی ہے۔ انہوں نے کہا مجھے امید ہے کہ نومنتخب امریکی صدر جوبائیڈن میں بھی افغان عمل جاری رکھیں گے۔ 

وزیراعظم عمران خان نے فورم میں شامل ماہرین سے رائے بھی لی کہ وہ بتائیں کہ پاکستان اپنے بھل اور سبزیوں کی برآمدات میں کیسے اضافہ کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بہترین پھل اور سبزیاں پیدا کرتاہے  مگر برآمدات میں پیچھے ہے۔ 


ای پیپر