Antonio Guterres, unconditional, ceasefire, Afghanistan, Ashraf Ghani
کیپشن:   فائل فوٹو
25 نومبر 2020 (10:34) 2020-11-25

نیویارک: اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے افغانستان میں فوری طور پر غیر مشروط جنگ بندی کا مطالبہ کر دیا۔

جنیوا میں سیکرٹری جنرل نے افغان ڈونر کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ دوحہ میں طالبان کے ساتھ طے ہونے والے امن معاہدے پر عمل کے ساز گار ماحول کے لیے غیر مشروط جنگ بندی ضروری ہے۔ انہوں نے امن عمل میں خواتین ، نوجوان اور متاثرین کو شامل کرنے پر زور دیا۔

خیال رہے کہ ڈونر کانفرنس میں افغانستان کے لیے یورپی یونین کی جانب سے آئندہ چار سالوں کے لیے ایک اشاریہ 43 ارب امریکی ڈالر کا اعلان کیا گیا۔

یاد رہے کہ افغان امن کے لیے پاکستان نے بھی اہم کردار ادا کیا ہے۔ امریکا اور افغانستان نے خاص طور پر عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے اس حوالے سے درخواست کی تھی۔ پاکستان کی مداخلت کے بعد امریکا اور افغان عسکریت پسندوں میں امن معاہدہ طے پایا جس کے مطابق امریکا افغانستان سے اپنی فوج اس سال کے آخر تک نکال لے گا۔

اپنے وعدے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے افغانستان سے اپنی فوج کے انخلا پر عملدرآمد کروایا۔ افغانستان سے امریکی فوج کے انخلا پر نیٹو سربراہ کا کہنا تھا کہ امریکا نے افغانستان چھوڑنے کے فیصلے میں جلد بازی کی ہے۔ اُن کے مطابق امریکا کو ابھی افغانستان میں رہنا چاہیے تھا۔

یاد رہے کہ پاکستان افغان امن معاہدے کے حق میں ہے اس لیے پاکستان نے دونوں پارٹیوں کو ایک فلیٹ فارم پر لانے میں اہم کردار ادا کیا۔ عمران خان کئی بار اس بات کا اظہار کر چکے ہیں کہ افغانستان میں قیام امن پاکستان کے حق میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمسایہ ملک میں امن قائم ہونے کے بعد پاکستان کی معشیت میں بہتری آئے گی۔

خیال رہے کہ بھارت افغانستان میں امن کے حق میں نہیں ہے۔


ای پیپر