نیب کیلئے آسان شکار نہیں بنوں گی، مریم نواز
سورس:   فوٹو/اسکرین گریب نیو نیوز
25 مارچ 2021 (20:44) 2021-03-25

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ کورونا کی وجہ سے پیشی ملتوی کی تو وزیراعظم نے اجلاس کیوں بلوایا، کیا ملک میں قانون کا اطلاق صر ف اپوزیشن پر ہوتا ہے جبکہ نیب احتساب کے نام پر صرف اپوزیشن کو نشانہ بنا رہا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق مریم نواز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا قومی احتساب بیورو(نیب) عمران خان نیازی کے کہنے پر چلتا ہے اور ملک میں قانون ہے تو وزیراعظم آفس میں بھی لاک ڈاؤن ہونا چاہیئے کیونکہہ کورونا کی وجہ سے اگر پیشی ملتوی کی گئی ہے تو وزیراعظم نے آج اجلاس کیوں بلوایا۔ 

ان کا مزید کہنا تھا کہ نیب نے جتنا انتقام لینا تھا لے لیا لیکن میں اس کے لئے آسان شکار نہیں بنوں گی کیونکہ نیب پولیٹیکل انجینئرنگ کا ادارہ ہےلیکن نیب کو بتانا چاہتی ہوں کہ ان کے چہرے عوام نے پہچان لیے ہیں اور عمران خان مشکل میں ہوتا ہے تو یہ اس کی مدد کو پہنچتے ہیں تاہم جس کیس میں مجھے بلایا گیا اس کیس میں 48 دن میں نیب میں رہ چکی ہوں اور جو سلوک وہاں ہوا اس کو بھی قوم کے سامنے لاؤں گی۔

انہوں نے مزید کہا عوام کو اب اس کھیل کو سمجھ چکی ہے اور میں عوام کی شکر گزار ہونے کے ساتھ ساتھ خصوصی طور پر پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی بھی شکریہ ادا کرتی ہوں جنہوں نے مسلم لیگ (ن) کو سپورٹ کیا۔

سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کس جماعت سے ہو گا کے بارے میں پوچھے گئے سوال پر مریم نواز نے کہا سینیٹ میں مسلم لیگ (ن) کی جانب سے اپوزیشن لیڈر اعظم نذیر تارڑ ہوں گے کیونکہ اپوزیشن اتحاد کی جماعتوں میں یہ طے ہوا تھا کہ چیئرمین سینیٹ یوسف رضا گیلانی ہوں گے اور اپوزیشن لیڈر مسلم لیگ نواز سے ہو گا اور اعظم نذیر تارڑ کے نام پر سب نے اتفاق کیا تھا۔ 

اس موقع پر بلوچستان نیشنل پارٹی (بی این پی مینگل) کے نومنتخب سینیٹر جہانزیب جمال دینی نے کہا مریم نواز سے ہونے والی آج کی ملاقات میں موجودہ حالات پر تبادلہ خیال کیا گیا اور کوشش ہو گی پی ڈی ایم کو مزید مضبوط کریں کیونکہ اپوزیشن اتحاد پاکستان میں آئین و قانون کی حکمرانی چاہتا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کے فیصلے کے ساتھ ہیں لیکن اپوزیشن سے انتقام لیا جا رہا ہے اور حکومت کی ناکام پالیسیوں سے مہنگائی عروج کو پہنچ گئی ہے جس کی وجہ سے غریب لوگوں کا جینا اجیرن ہو چکا ہے۔ 

خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کی 26 مارچ کی پیشی ملتوی کر دی۔ نیب کی جانب سے پیشی ملتوی کرنے کے حوالے سے اعلامیہ جاری کر دیا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ ان کی پیشی کی نئی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔ 

اعلامیے میں کہا گیا کہ آج ایک اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد ہوا جس میں مریم نواز کی نیب آفس لاہور میں پیش کورونا وبا کی تیسری لہر کے حوالے سے جاری ہدایات کا جائزہ لیا گیا۔ نیب نے مریم نواز کو پہلے بھی طلب کیا تھا اور اس موقع پر نیب لاہور کی عمارت  میں دانستہ طور پر پتھراؤ کیا گیا تھا جو کہ نیب کی تفتیش میں رکاوٹ ڈالنے کے مترادف ہے جبکہ ملزمان کیخلاف اس غیر قانونی برتاؤ کی ایف آئی آر بھی متعلقہ تھانے میں درج ہے۔

نیب اعلامیے میں یہ بھی کہا گیا کہ نیب قانون کی شق (a) 31 کی رو سے تحقیقات میں عدم تعاون کا مظاہرہ کرنے، رخنہ ڈالنے یا گمراہ کرنے کی صورت میں 10 سال تک قید کی سزا سنائی جا سکتی ہے اور ان قانونی اختیارات کے باوجود نیب کی جانب سے تاحال انتہائی صبرکا مظاہرہ کیا گیا ہے۔

اعلامیے میں مزید کہا گیا کہ نیب لاہور نے مریم نواز کو دوسری مرتبہ 26 مارچ کو نیب تفتیشی ٹیموں کے روبرو پیش ہونے کے لیے نوٹس ارسال کیے تاہم نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کی ہدایات کو مد نظر رکھتے ہوئے اور مفاد عامہ کے پیش نظر نیب کی جانب اصولی فیصلہ کرتے ہوئے ملزمہ مریم نواز کی نیب لاہور میں کل کی پیشی ملتوی کر دی گئی ہے اور نئی تاریخ کا اعلان بعد ازاں مناسب وقت پر کر دیا جائے گا۔

یاد رہے کہ نیب نے مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کو 26 مارچ کو طلب کر رکھا تھا اور اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مریم نواز کی پیشی کے موقع پر کسی کو بھی قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

بشکریہ(نیو نیوز)


ای پیپر