NA-75 Daska: Supreme Court orders postponement of elections on April 10
کیپشن:   فائل فوٹو
25 مارچ 2021 (13:36) 2021-03-25

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 75 ڈسکہ میں 10 اپریل کو ہونے والا الیکشن ملتوی کرنے کا حکم دیدیا ہے۔

تفصیل کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان نے این اے 75 ڈسکہ میں 10 اپریل کو دوبارہ پولنگ کا عمل روکنے کا حکم دیدیا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کی ترجمان نوشین افتخار کی جانب سے وکیل سلمان اکرم راجہ عدالت کے روبرو پیش ہوئے اور ضلع ڈسکہ کا مکمل نقشہ پیش کیا۔

انہوں نے اپنے دلائل میں کہا کہ ڈسکہ شہر میں 76 پولنگ سٹیشنز ہیں، جن میں سے 34 پولنگ سٹیشنز سے شکایات آئیں۔ الیکشن کمیشن نے بھی 34 پولنگ اسٹیشنزکی نشاندہی کی، اس کے علاوہ 20 پریزائیڈنگ افسر بھی غائب ہوئے۔

بیرسٹر سلمان اکرم راجہ کا کہنا تھا کہ ڈسکہ میں نوشین افتخار کے خاندان کا اثرورسوخ زیادہ ہے کیونکہ ان کے والد 5 بار منتخب ہو چکے ہیں۔ اس موقع پر جسٹس عمرعطا بندیال نے سلمان اکرم راجا سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے ایک دن میں بہت زیادہ تیاری کرلی؟

جسٹس عمر عطا بندیال کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کا اثرورسوخ زیادہ تھا تو تشدد اور بے امنی پھیلانے کی ضرورت کیوں پڑی؟ آپ الیکشن کے نتائج سے خوش تھے، اس پر کوئی اعتراض نہیں اٹھایا۔

سوال یہ ہے کہ پولنگ کے دن کون اور کیوں یہ مسائل پیدا کرتا رہا؟ کیا ایک امیدوار طاقتور تھا، اس لیے دوسرے نے یہ حرکتیں کروائیں؟ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ 10 پولنگ سٹیشنز پر ووٹنگ کا عمل کافی دیر معطل رہا۔ مسلم لیگ (ن) کے کارکنان نے پرتشدد واقعات شروع کیے۔

معزز جج جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ موجودہ کیس کے فیصلے میں وقت درکار ہے۔ نوشین افتخار کے علاوہ باقی فریقین کو بھی سننا ہے۔ پولنگ کا فیصلہ الیکشن کمیشن کا برقرار ہے، فی الحال 10 اپریل کا فیصلہ ملتوی کر رہے ہیں۔ سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت غیرمعینہ مدت کیلئے ملتوی کردی۔


ای پیپر