Source : Yahoo

غیر حتمی غیر سرکاری نتائج ،چوہدری نثار کو بڑا جھٹکا
25 جولائی 2018 (21:48) 2018-07-25

الیکشن 2018کے نتائج موصول ۔۔۔ غیر حتمی غیر سرکاری نتائج

 

احسن اقبال یا ابرارالحق ؟کس کو برتری حاصل ؟

این اے 78 ناروال میں احسن اقبال 20 ہزار کے ساتھ پہلے اور پی ٹی آئی کے ابرار الحق 9 ہزار ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔

 

 

غیر حتمی غیر سرکاری نتائج ،چوہدری نثار کو بڑا جھٹکا
این اے 63 راول پنڈی میں چوہدری نثار 17 سو ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار غلام سرور خان ساڑھے تین ہزار ووٹ لے کر پہلے نمبر پر ہیں۔

عمران خان بمقابلہ شاہد خاقان عباسی
عام انتخابات 2018 کے نتائج آنا شروع ہوگئے ہیں۔ غیر سرکاری و غیر حتمی نتائج کے مطابق قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 اسلام آباد میں عمران خان 202 ووٹ لے کر سب سے آگے ہیں اور شاہد خاقان عباسی دوسرے نمبر پر ہیں۔

بلاول بھٹو کے پہلے سیاسی امتحان کا رزلٹ آنا شروع
این اے 200 لاڑکانہ میں بلاول بھٹو زرداری پہلے نمبر پر ہیں جب کہ این اے 206 میں خورشید شاہ 844 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر ہیں۔قومی اسمبلی میں تحریک انصاف اور ن لیگ نے کتنی کتنی سیٹیں لے لیں؟حیران کن نتائج سامنے آنے لگے.

قومی اسمبلی میں کون آگے کون پیچھے ؟

ملک بھر میں عام انتخابات کے نتائج کی آمد کا سلسلہ جاری ہے اور غیرسرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق تحریک انصاف کو 75 اور مسلم لیگ (ن) کو 51 پر برتری حاصل ہے۔ غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج کے مطابق قومی اسمبلی کی 75 نشستوں پر تحریک انصاف کو برتری حاصل ہے جب کہ (ن) لیگ کو 51 اور پیپلز پارٹی کو 27 نشستوں پر اب تک کی اطلاعات کے مطابق سبقت حاصل ہے۔

قومی اسمبلی کی نشستوں پر اب تک کی اطلاعات کے مطابق 23 نشستوں پر آزاد امیدواروں اور 11 نشستوں پر متحدہ مجلس عمل برتری حاصل ہے۔اسی طرح متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کو 5، جی ڈی اے 8، بی این پی 5، مسلم لیگ (ق) کو 3 نشستوں پر برتری حاصل ہے۔

ابتدائی تفصیلات :
پولنگ کا عمل مکمل ہونے کے بعد انتخابی نتائج موصول ہونا شروع ہوگئے اور پہلے غیرحتمی اور غیرسرکاری نتیجے کے مطابق خیبرپختونخوا کے صوبائی حلقے پی کے 20 بونیر سے پی ٹی آئی کے ریاض خان 220 ووٹ لیکر آگے اور آزاد امیدار بخت جہاں خان 164 ووٹوں کے ساتھ پیچھے ہیں۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 206 سکھر ون کے 257 میں سے 2 پولنگ اسٹیشنز کے غیرسرکاری اور غیر حتمی نتائج کے مطابق پیپلز پارٹی کے خورشید شاہ 627 ووٹ کے ساتھ آگے اور تحریک انصاف کے طاہر حسین شاہ کا 40 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

این اے 208 خیرپورون کے 295 پولنگ اسٹیشنز میں سے ایک کا غیر سرکاری نتیجہ سامنے آگیا جس کے مطابق پیپلز پارٹی کی نفیسہ شاہ 438 ووٹ کے ساتھ آگے اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے غوث علی شاہ 67 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔

قومی اسمبلی کے 272 میں سے 270 حلقوں اور صوبائی اسمبلیوں کے 577 میں سے 570 حلقوں کے لیے ملک بھر سے 10 کروڑ 59 لاکھ 55 ہزار 409 رجسٹرڈ ووٹرز کو اپنا حق رائے دہی استعمال کیا جانا تھا۔

قومی اور صوبائی اسمبلیوں کے 8 حلقوں پر انتخابات ملتوی کیے گئے جہاں الیکشن اب بعد میں ہوں گے، جن حلقوں میں آج انتخابات نہیں ہوئے، ان میں قومی اسمبلی کے دو حلقے این اے 60 راولپنڈی اور این اے 103 فیصل آباد شامل ہیں۔

صوبائی اسمبلیوں کے حلقے پی کے 78 پشاور، پی کے 99 ڈیرہ اسماعیل خان، پی پی 87 میانوالی، پی پی 103 فیصل آباد، پی ایس 87 ملیر اور پی بی 35 مستونگ پر انتخابات اب بعد میں ہوں گے۔

اس کے علاوہ سندھ اسمبلی کے حلقے پی ایس 6 کشمور سے میر شبیر بجارانی الیکشن سے قبل ہی بلامقابلہ منتخب ہوچکے ہیں۔


ای پیپر