Pakistan, Lahore, Hospital, police
25 جنوری 2021 (22:15) 2021-01-25

لاہور: نجی ٹیچنگ ہسپتال کے باہر ملنے والے لڑکی کی نعش کے حوالے سے اہم پیش رفت ہوئی۔ دوران حراست ملزم نے انکشاف کیا کہ لڑکی حاملہ تھی۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم اور گرفتار اسامہ آپس میں دوست تھے اور دونوں کا تعلق گجرات سے ہے۔ ملزم اسامہ کے مطابق لڑکی کی طبیعت زیادہ خراب ہونے کی وجہ سے پہلے ایک ہسپتال میں لے کر گیا لیکن بعد میں ٹیچنگ ہسپتال کی بیرونی ایمرجنسی کے باہر چھوڑ کر فرار ہو گیا۔

ذرائع کے مطابق اسقاط حمل کے دوران لڑکی کی حالت غیر ہوئی تھی جس کے بعد اسے ٹیچنگ ہسپتال میں لایا گیا لیکن وہاں پہنچنے سے پہلے ہی لڑکی دم توڑ گئیں تھیں۔ 

اس سے قبل سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا گیا تھا کہ ملزم اسامہ نے مریم کو اٹھا کر گاڑی سے باہر نکالا جبکہ اس کا ساتھی گاڑی چلا رہا تھا۔ ملزم لاش ہسپتال کی ایمرجنسی میں رکھ کر فرار ہو جاتا ہے۔ پولیس نے ملزم اسامہ سے تحقیقات شروع کر دی جبکہ دوسرے ملزم کی تلاش جاری ہے۔

پولیس کے مطابق گجرات کی رہائشی 20 سالہ مریم گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور سے اپنی ڈگری لینے آئی تھی جہاں سے وہ رائیونڈ روڈ پر واقع نجی میڈیکل یونیورسٹی چلی گئی ۔ 


ای پیپر