Maryam Nawaz, PML-N, Bilawal, no-confidence motion, PM Imran Khan
25 جنوری 2021 (15:51) 2021-01-25

 لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے بلاول بھٹو کی جانب سے وزیر اعظم کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے سے متعلق کہا ہے کہ بلاول بھٹو کی بات سنی ہے ، پی ڈی ایم کے آئندہ اجلاس میں اس بات کو ڈسکسک کیا جائے گا ، اب حکومت کو این آر او نہیں ملے گا۔

خیال رہے کہ پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان ان ہاؤس تبدیلی کے خلاف ہیں جبکہ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ان ہاؤس تبدیلی کے حق میں ہیں۔ اس صورتحال میں ن لیگ نے دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی اپنائی ہوئی ہے۔ اس لیے مریم نواز نے کہا ہے کہ وہ اس معاملے پر پی ڈی ایم کے اجلاس میں بات کریں گی۔

دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بلاول بھٹو زرداری کی تحریک عدم اعتماد کی تجویز سامنے آنے کے بعد اُن سے مطالبہ کیا ہے کہ اب وہ خود عمران خان کو پاکستان کا وزیراعظم تسلیم کر چکے ہیں۔ اس لیے اب بلاول وزیر اعظم کو الیکٹڈ وزیر اعظم کہا کریں۔

واضح رہے کہ حکومتی ترجمانوں کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم میں پھوٹ پڑ گئی ہے اور پیپلز پارٹی نے اپنی راہیں جدا کر لیں ہیں جبکہ مولانا فضل الرحمان نے ان دعووں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی ڈی ایم متحدہ ہے۔


ای پیپر