سکھر میں لڑکی اور باپ کو قتل کرنے والا پولیس اہلکار نکلا
25 جنوری 2019 (20:11) 2019-01-25

سکھر: سکھر میں باپ بیٹی کے قتل کا معمہ حل ہوگیا، قاتل پولیس اہلکار نکلا جو مقتولہ آسیہ سے شادی کرنا چاہتا تھا اور انکار پر انتہائی قدم اٹھایا۔

اطلاعات کے مطابق سکھر کے علاقہ بندر روڈ میں فلیٹ سے 80 سالہ قربان بلوچ نامی شخص اور اس کی 40 سالہ بیٹی آسیہ کی لاشیں ملیں۔ابتدائی بیان میں پولیس نے بتایا کہ دونوں کو فائرنگ کرکے قتل کیا گیا ہے۔ مقتول قربان سکھر الیکٹرک پاور کمپنی کا ریٹائرڈ ملازم تھا جبکہ مقتولہ آسیہ گوپانگ طلاق یافتہ تھی اور والد کے ساتھ 9 سال سے رہائش پذیر تھی۔

پولیس نے دونوں کی لاشوں کو پوسٹ مارٹم کیلئے اسپتال منتقل کیا اور قتل کی وجوہات اور ملزمان کا پتا چلانے کے لیے تحقیقات کو آگے بڑھانا شروع کیا۔جب قتل میں استعمال ہونے والی گولیوں کے خول کا فرانزک تجزیہ کرایا گیا تو معلوم ہوا کہ قتل میں ایک پولیس اہلکار ملوث ہے جسے گرفتار کرلیا گیا ہے۔

ایس ایس پی عرفان سموں کے مطابق قتل کے الزام میں رحمت گوپانگ نامی شخص کو گرفتار کیا گیا ہے جو ملزم پولیس اہلکار ہے اور آسیہ سے شادی کرنا چاہتا تھا۔ پولیس کے مطابق والد کے انکار پر ملزم نے باپ بیٹی کو گھر میں گھس کر قتل کردیا۔


ای پیپر