maulana fazal ureman,pdm,jalsa,maryam nawaz,wazirstan,south,war,killed
25 فروری 2021 (14:36) 2021-02-25

پشاور : پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ جنوبی وزیرستان کے دو قبیلوں میں کئی روز سے جنگ جاری ہے جس میں کئی اموات ہو چکی ہیں اسے فوری طور پر انتظامیہ کی طرف سے روکا جانا چاہیے ۔ ضمنی انتخابات میں کھلی دھاندلی  ہوئی ہے  جسے ہم کسی صورت تسلیم نہیں کرتے۔ ضمنی انتخابات میں جو دھاندلی کی گئی ہے یہ ہمیں کسی قیمت پر قابل قبول نہیں ہیں۔الیکشن کمیشن نے نتائج روکے ہوئے ہیں اور اس پر ان کو حقیقت پسندانہ انداز کے ساتھ اپنا فیصلہ صادر کرنا چاہیے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ اس الیکشن کو منسوخ کر دینا چاہیے اور ابھی الیکشن نہیں ہوا تھا جب 600 جعلی پوسٹل ووٹ پکڑے گئے اور وہ ثابت ہو چکے ہیں کرم ایجنسی کے حلقے میں اس کے باوجود پی ٹی آئی کے امیدوار کو نااہل قرار دیا جاتا چاہیے تھا اور وہ حقیقت میں نااہل ہےمگر اسے الیکشن لڑنے دیا گیا اور آخری دس بارہ پولنگ سٹیشنوں میں تیسرے نمبر پر آنیوالے کو پہلے نمبر پر لے گئے۔واضح طور پر دھاندلی ہوئی ہے اور موقع پر موجود پولنگ آفیسرز یا تو اس میں ملوث تھے یا پھر بے بس تھے۔ ہم انتخابات کے نتائج کو تسلیم نہیں کر سکتے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت جنوبی وزیرستان میں قبائلی جنگ شروع ہے۔ کئی روز سے دو قبیلے ایک دوسرے  کیخلاف مورچہ زن ہیں ٗ خون ریزی ہو رہی ہے اور اس سے مزید اضافے کا خطرہ بھی موجود ہے۔وہاں پر موجود انتظامیہ یا تو بے بس ہے یا پھر عمدا وہ سمجھتے ہیں کہ قبائل آپس میں لڑیں تاکہ جن علاقوں میں جنگ ہو رہی ہے وہاں پر ہمیں قبضہ کرنے کا موقع مل جائے۔ اب تک چار یا پانچ اموات ہو چکی ہیں۔ دو گنا لوگ زخمی ہیں اور مزید خون ریزی ہو سکتی ہے۔


ای پیپر