انٹربینک میں ڈالر گر کر 132روپے کی سطح پر آ گیا
24 اکتوبر 2018 (14:15) 2018-10-24

کراچی: انٹربینک میں روپیہ تگڑا ہو گیا اورڈالر گر کر 132روپے کی سطح پر آ گیا ۔ ڈالر کی قیمت میں ایک روپے 92پیسے کی کمی ہوئی ہے۔ دوسری جانب سٹاک مارکیٹ میں بھی تیزی دیکھنے میں آئی ہے، کاروبار کے آغاز پر 1150پوائنٹس کا اضافہ ہوا ہے۔سعودیہ عرب کی جانب سے پاکستان کی بگڑتی معاشی صورتحال کو سہارا دینے کی خاطر فوری طور پر 3ارب ڈالر کا قرض اور 3ارب ڈالرتین سال تک کا سالانہ ادھار پر تیل دینے کا فیصلہ سٹاک مارکیٹ اور روپے کے لئے خوش آئند ثابت ہوا۔

انٹر بینک میں ڈالر ایک روپے 92پیسے کی کمی کے بعد 132روپے کا ہو گیا جس کے بعد حکومتی قرضوں میں 180ارب روپے کی کمی ہو گئی ہے۔ ڈالر کی قیمت میں گراوٹ ادائیگیوں کے توازن اور پاکستانی معیشت پر مثبت اثرات مرتب کر ے گی۔ پاکستان سٹاک مارکیٹ میں تیزی دیکھنے میں آئی، کاروبار کے آغاز پر 1200پوائنٹس سے زائد کا اضافہ ہوا اور 100انڈیکس 38ہزار 850پوائنٹس کی سطح پر آ گیا جبکہ حصص کی مالیت میں 125ارب روپے سے زائد کا اضافہ ہوا۔معاشی تجزیہ کاروں کے مطابق پاکستان کو جن معاشی چیلنجز کا سامانا کرنا پڑ رہا ہے اس میں فوری طور پر پاکستان کیلئے رقم کا بندوبست کرنا بہت ضروری تھا اور ایسے وقت میں دوست ملک سعودیہ عرب سے رقم کا ملنا کسی نعمت سے کم نہیں۔ 


ای پیپر