UAE, ownership, foreign investors, Mohammed bin Zayed Al Nahyan, trade
24 نومبر 2020 (13:39) 2020-11-24

دبئی: متحدہ عرب امارات نے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو سو فیصد ملکیت کا حق دیدیا ، اس قانون کا اطلاق یکم دسمبر 2020 سے کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ زید بن النہان کی ہدایت کے مطابق دبئی میں کاروبار کرنے والے غیر ملکی سرمایہ کار بغیر کسی سپانسر کے اپنی کمپنی کے سو فیصد مالک ہوں گے، اس فیصلے کا مقصد ملک کی پوزیشن کو سرمایہ کاری کے لیے مزید مستحکم کرنا ہے۔

اس سے غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ ہو گیا، اس کے نفاذ کے لیے 2015 کے قانون برائے غیر ملکی ملکیت میں ترمیم کر دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ عالمی وبا کی وجہ سے یو اے ای میں غیر ملکی سرمایہ کاری بہت کم ہوئی جس کی وجہ سے معشیت کو کافی نقصان ہوا۔ اس نقصان کو پورا کرنے کیلئے یو اے ای کی حکومت نے غیر ملکیوں کے راستے میں حائل ہر رکاوٹ کو دور کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل رواں ماہ میں بھی یو اے ای کے حکمرانوں نے اپنے قوانین میں نمایاں تبدیلیاں کیں تھیں۔ یہ ترامیم فوجداری ، سول اور وراثت کے قوانین میں کیں گئیں۔

نئی ترامیم کے مطابق نابالغ کے ساتھ زیادتی کرنے والے کو موت کی سزا دی جائے گی۔ اماراتی حکومت نے اعلان کیا کہ اب غیرت کے نام پر بہن اور بیٹی کو قتل کرنے والوں کو بھی سزا دی جائے گی ، اس کے علاوہ غیر مسلم کی سہولت کے لیے منظور شدہ مقامات پر شراب پینے بیچنے کی بھی اجازت دی گئی۔

حکومت نے غیر ملکیوں کو اسلامی قوانین کی بجائے اُن کے اپنے رسم و رواج کے مطابق یو اے ای میں شادی اور طلاق دینے کی اجازت دیدی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یو اے ای کی جانب سے ان ترامیم کا فیصلہ اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کے بعد کیا گیا۔


ای پیپر