Second wave, pandemic, PTI government, NCOC, WHO, lockdown
کیپشن:   فائل فوٹو
24 نومبر 2020 (09:41) 2020-11-24

لاہور: پاکستان میں ہر گزرتے دن کے ساتھ عالمی وبا کے کیسز بڑھنے لگے ہیں، مزید 48 افراد انتقال کرگئے، ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 7 ہزار 744 ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق 24 گھنٹوں کے دوران 2 ہزار 954 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، این سی او سی کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق، 3 لاکھ 79 ہزار 883 افراد عالمی وبا سے متاثر جبکہ تین لاکھ 31 ہزار 760 مریض وبا کو شکست دے کر صحتیاب ہو چکے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ملک میں عالمی وبا کی دوسری لہر کے شدت پکڑنے کے بعد مثبت کیسز کی شرح 7.46 فیصد تک پہنچ چکی ہے۔

خیال رہے کہ پنجاب میں صوبائی حکومت نے عالمی وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے دکانیں اور مارکیٹیں جلد بند کرنے کی تجاویز پر غور شروع کردیا ہے۔ اس بارے میں جلد فیصلہ ہونے کا امکان ہے۔

این سی او سی کے مطابق ملک میں سب سے زیادہ عالمی وبا کے مثبت آنے کی شرح حیدرآباد میں ریکارڈ کی گئی۔ جس کے بعد سندھ حکومت نے حیدرآباد کے 17 علاقوں میں 5 دسمبر تک اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ مظفرآباد میں وبا کی شرح 19 فیصد تک پہنچ گئی۔

ادھر آزاد کشمیر میں بھی حکومت نے دو ہفتوں کے لیے مکمل لاک ڈاون کا اعلان کر دیا ہے۔

عالمی وبا سے بچنے کے لیے پی ٹی آئی کی حکومت نے ملک بھر میں اسکولز کو بند کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔ وفاقی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں دوسری لہر زیادہ خطرناک ثابت ہو رہی ہے جس سے مریضوں کی تعداد میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے۔ اس صوتحال میں بچوں کو اسکولز بلانا اُن کی جان خطرے میں ڈالنے کے مترادف ہے۔

یاد رہے کہ ملک میں 26 نومبر سے 10 جنوری تک اسکولز بند رہیں گے۔


ای پیپر