Ali Imran Junior, column writer, Urdu, Nai Baat Newspaper, e-paper, Pakistan
24 مارچ 2021 (11:38) 2021-03-24

دوستو، نیندکا تلفظ کچھ اس طرح سے ہے کہ اگر اسے توڑ کر لکھا جائے تو ’’نی نند‘‘ پڑھا جائے۔۔ اور نند تو ویسے بھی مشہور نیندیں اڑانے کے لئے ہوتی ہے۔۔ بہو کے لئے نند سسرال میں سب سے بڑی حریف ہوتی ہے ، جس سے اس کی کبھی نہیں بنتی۔۔ ساس کے بعد نند دوسری ایسی’’ ہستی ‘‘ہے جسے دیکھ کر بہو کبھی نہیں ’’ہنستی‘‘۔۔۔ اور یہی نند جب بہو کے بچوں کی پھوپھو بن جاتی ہے تو پھر اس پر ہزاروں لطیفے الگ بن جاتے ہیں۔۔ بہو کے بچے اگر نالائق ہوئے تو بہو کے مطابق یہ ’’ددھیال‘‘ پر گئے ہیں ۔۔ساس و نند کے مطابق یہ سب ’’ننھیال‘‘ پر گئے ہیں۔۔ پہلے ذکر ہوجائے کچھ نیند کا پھر ’’نی نند‘‘ کا۔۔ تو شروع کرتے ہیں اپنی اوٹ پٹانگ باتیں۔۔۔

رات کو جلدی سونے اور صبح جلد اٹھنے کے صحت کے لیے کئی فوائد ہیں لیکن اب دو ماہر ڈاکٹروں نے اپنی نئی کتاب میں صبح جلدی اٹھنے کا ایک ایسا فائدہ بتا دیا ہے کہ ہر سننے والا دنگ رہ جائے۔ ڈاکٹر سوزان ایشے بیلکے اور ڈاکٹر سوزان کرشنر برونس نے اپنی مشترکہ تصنیف میں لکھا ہے کہ صبح جلدی اٹھنے سے انسان کو بھوک کم لگتی ہے اور وہ کم کھانا کھاتا ہے، جس کے نتیجے میں اسے موٹاپے پر قابو پانے میں مدد ملتی ہے۔رپورٹ کے مطابق اس تصنیف میں دونوں ماہر ڈاکٹر دراصل خواتین کو ادھیڑ عمری میں موٹاپے سے بچنے کے مشورے دے رہی تھی جب انہوں نے یہ حیران کن بات لکھی۔ خواتین عموماً بچوں کی پیدائش کے مراحل سے گزرنے کے بعد موٹاپے کی طرف مائل ہوتی ہیں، جنہیں ان ماہرین نے ایک طرف سحرخیزی کا مشورہ دیتے ہوئے اپنی کتاب میں لکھا کہ ایسی خواتین کو وٹامن ڈی لینا چاہیے کیونکہ یہ وٹامن جسم میں چربی جلانے کا کام کرتا ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے خواتین کو ڈائٹنگ نہ کرنے اور باقاعدگی سے کھانا کھانے کی ہدایت کی اور کہا کہ اس کے ساتھ وہ جتنی زیادہ ہو سکے ’واک‘ کیا کریں۔ ان طریقوں پر عمل کرتے ہوئے خواتین ڈھلتی عمر میں خود کو موٹاپے سے محفوظ رکھ سکتی ہیں۔

کئی لوگوں کو بستر پر لیٹنے کے بعد تادیر نیند نہیں آتی۔ اگر آپ بھی انہی میں سے ایک ہیں تو یہ خبر آپ کے لیے ہے۔ ماہرین نے کچھ ایسے طریقے بتائے ہیں جن کے ذریعے آپ جلد نیند لاسکتے ہیں اور ان میں پہلا طریقہ یہ ہے کہ آپ دوسروں کے سامنے یہ شیخی بگھارنا ترک کر دیں کہ آپ کتنا کم سوتے ہیں یا آپ اتنے مصروف ہیں کہ آپ کے پاس سونے کا وقت بھی نہیں ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسی شیخیاں بگھارنے سے ایسے نفسیاتی اثرات مرتب ہوتے ہیں کہ آپ کی نیند واقعی کم ہو جاتی ہے۔ جن لوگوں کو نیند کم آتی ہے، انہیں زیادہ سونے کی حوصلہ افزائی کرنی چاہیے۔ماہرین نے دوسرا حیران کن طریقہ یہ بتایا کہ سونے سے دو گھنٹے پہلے اپنے پارٹنر کے ساتھ جھگڑا کریں اور پھر اس جھگڑے کا تصفیہ کرکے سونے کے لیے بسترمیں جائیں۔ جھگڑا کے بعد معاملہ رفع دفع ہونے سے جذبات پرامن ہو جاتے ہیں اور ذہن پرسکون ہو جاتا ہے۔ ایسی صورت میں آپ کو فوری نیند آ جاتی ہے۔ اس کے علاوہ ماہرین نے بتایا کہ دوپہر کو ایک سے تین بجے کے درمیان 10سے 15منٹ کے لیے قیلولہ کرنا اور میٹھی اشیاء کھانے سے گریز کرنا بھی جلد نیند لانے کے لیے بہت فائدہ مند ہوتا ہے۔

ہمارے محترم وزیراعظم صاحب نے کورونا سے بچاؤ کی ویکیسن تو لگوا لی لیکن پھر وہ کورونا وائرس کاشکار بھی ہوگئے۔۔ جس پر ہمارے پیارے دوست کا خیال ہے کہ ۔۔میرے مطابق یہ موزوں ترین وقت ہے کہ عمران خان تمام تر اختلافات بھلا کر ساری اپوزیشن کو گلے لگا لے۔۔۔ایک پٹواری نے سوشل میڈیا پر لکھ دیا کہ۔۔ کپتان کے حکومت میں پہلی بار کچھ ’’پازیٹیو‘‘ آیا ہے۔۔ساٹھ سال سے اوپر کے بزرگوں کو یہ ویکیسن لگائی جارہی ہے۔۔ ہمارے ایک جاننے والے نے بھی ویکسین لگوالی۔۔ ویکسین لگوا کر جیسے ہی وہ گھر پہنچا تو اس نے محسوس کیا کہ اسے دھندلا دھندلا سا دکھائی دینے لگ گیا ہے اس نے فوراً کرونا سنٹر فون کیا اور اپنی صورتحال سے انہیں آگاہ کیا۔۔کورونا سینٹر والوں نے انکشاف کیا کہ جس نرس نے ان صاحب کو انجکشن لگایا ہے اسے بھی کچھ ایسا ہی محسوس ہورہا ہے۔۔ اسے فوری سینٹر واپس آنے کا کہاگیاتاکہ وہ نرس کو اس کی عینک واپس کرکے اپنی عینک لے جائے۔۔ عینک دا مسئلہ سی۔۔کہاجارہا ہے کہ محکمہ  صحت کو ویکسین لگوانے کے لیے 1166 پر اب تک کسی خاتون کی درخواست موصول نہیں ہوئی،وجہ معلوم ہوئی ہے کہ خواتین کا کہنا ہے کہ پہلے ساٹھ سال کی شرط ہٹالیں۔۔باباجی فرماتے ہیں۔۔لاک ڈاؤن کی وجہ گھر میں بیٹھا ہوں۔۔میری  زوجہ ماجدہ بار بار میرے قریب سے گزرتی ہے تو اونچا اونچا کہتی ہے۔۔اللہ بچائے اس آفت سے۔۔اب پتہ نہیں کسے آفت کہہ رہی ہے۔۔باباجی مزید فرماتے ہیں کہ ۔۔ آج کل وہ کورونا ایس اوپیز پر سختی سے عمل کررہے ہیں، اس لئے وہ جب بھی ہاتھ دھوتے ہیں زوجہ ماجدہ انہیں ٹوکتے ہوئے کہتی ہیں۔۔خالی ہاتھ دھونے سے بہتر ہے کہ ساتھ میں تین چار برتن بھی دھولیا کرو۔اطلاعات ملی ہیں کہ مالاکنڈ کے دو رہائشی عرصہ دس سال بعد اپنے آبائی گاؤں پہنچے تو ان کا کورونا ٹیسٹ کیاگیا، کورونا ٹیسٹ منفی آنے کی خوشی میں زبردست ہوائی فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق اور سترہ سے زائد زخمی ہوگئے۔۔

ایک خاتون خانہ کسی ماہر نفسیات کے پاس مشورے کی غرض سے گئی اور کہنے لگی۔۔میں عاقل،بالغ،خودمختار اور معاشی طور پر مضبوط ہوں،مجھے خاوند کی ضرورت نہیں،لیکن میرے والدین بضد ہیں کہ میری شادی کریں، مشورہ دیں کہ مجھے اب کیا کرنا چاہیئے۔۔ماہرنفسیات نے تسلی سے خاتون کی پوری بات سنی پھر کہنے لگا۔۔بے شک تم نے اپنی زندگی میں کافی کامیابیاں حاصل کرلیں۔۔ مگر سنو کبھی بے وجہ لڑنے کا دل کرے، کسی کو خوامخواہ ذلیل کرنا ہو یا کبھی غیر ارادی طور پر کچھ خامیاں یا ناکامیاں رہ جاتی ہیں۔۔ یا کسی غلطی سے کچھ غلط ہو جاتا ہے ۔۔ تو کیا تم وہ غلطی قبول کرو گی؟؟عورت نے برجستہ کہا۔۔نہیں بالکل بھی نہیں۔۔ماہرنفسیات بولا۔۔بس، اسی لئے تمہیں خاوند کی ضرورت ہے، تاکہ ناکامیاں اور غلطیاں سب اس کے سرتھوپ سکو۔۔خاتون نے فوری شادی کے لئے ہاں کردی، آخر پڑھی لکھی تھی ناں۔۔

اور اب چلتے چلتے آخری بات۔۔ زیادہ سیریس نہ رہا کریں۔آپ دنیا میں آئے ہیں ICU میں نہیں۔۔خوش رہیں اور خوشیاں بانٹیں۔۔


ای پیپر