آپ پی ایس ایل کا فائنل صرف ٹکٹ کے ذریعے نہیں دیکھ سکتے
24 مارچ 2018 (14:26)


کراچی: کراچی میں 25 مارچ کو ہونے والے پی ایس ایل کے فائنل کے سلسلے میں سیکیورٹی اور ٹریفک پلان ترتیب دے دیا گیا ہے، اس حوالے سے چند ضروری ہدایات دی گئی ہیں جن پر شائقینِ کرکٹ کو عمل کرنا ہوگا۔


تفصیلات کے مطابق ان ہدایات پر عمل کرکے شائقین بغیر کسی دقت کے اسٹیڈیم پہنچ پائیں گے۔ پی ایس ایل فائنل کے لیے سیکیورٹی پلان کے مطابق مخصوص شاہراہوں کو ٹریفک کے لیے بند کیا گیا ہے۔پہلا ڈائی ورڑن کارساز روڈ کا ٹرننگ پوائنٹ ہے جو یونی روسٹی روڈ سے دائیں جانب مڑ کر اسٹیڈیم کی طرف جاتا ہے، یہ روڈ عام ٹریفک کے لیے بند کر دیا جائے گا، اس لیے عوام سے اپیل ہے کہ وہ راشد منہاس روڈ سے مڑ کر گلشن اقبال اور لیاقت آباد 10 نمبر کی طرف جائیں۔ڈالمیا روڈ بھی عام ٹریفک کے لیے بند کر دیا جائے گا اور حسن اسکوائر سے اسٹیڈیم کی طرف آنے والا پل بھی عام ٹریفک کے لیے بند رہے گا۔نیو ٹاؤن سے بھی عام ٹریفک کا داخلہ بند ہوگا لیکن اسٹیڈیم روڈ پر واقع نجی اسپتالوں کے لیے ڈاکٹرز، پیرا میڈیکل اسٹاف، مریضوں اور ایمبولینسوں کو داخلے کی اجازت ہوگی۔


واک تھرو گیٹ سے گزرنے کے بعد شائقین کرکٹ کی تلاشی بھی لی جائے گی، خواتین اور مردوں کے لیے الگ الگ چیکنگ بوتھ بنائے گئے ہیں،چیکنگ کے بعد پی سی بی کا عملہ ٹکٹوں کی تصدیق کرے گا۔تماشائیوں کو پارکنگ سے شٹل سروس فراہم کی جائے گی جو ا?غاخان اسپتال، بحریہ یونیورسٹی یا ایکسپو سینٹر پر ڈراپ کرے گی جہاں سے اسٹیڈیم تک کا فاصلہ پیدل طے کرنا ہوگا، تاہم بزرگوں اور معزور شہریوں کو خصوصی بسوں کے ذریعے اسٹیڈیم لے جایا جائے گا۔اسٹیڈیم کے دروازے کھولنے اور شٹل سروس کا آْغاز دوپہر 12 بجے ہوگا جبکہ اسٹیڈیم کے دروازے 5 بجے بند کردیے جائیں گے جس کے بعد کسی کو داخلے کی اجازت نہیں ہوگی۔


اسٹیڈیم میں داخل ہونے والے تماشائی صرف اپنا موبائل فون اندر لے جاسکیں گے، اسٹیڈیم میں کھانے سمیت کسی قسم کے آتشی اسلحے، چاقو، چھری، لائٹر، کیمرہ، ریڈیو، موبائل چارجرسمیت دیگر چیزیں لانے کی ممانعت ہوگی۔رینجرز، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار نیشنل اسٹیڈیم کے اندر اور باہر تعینات ہوں گے۔ پی ایس ایل تھری کا فائنل دیکھنے والوں کو ٹکٹ ہی نہیں ، اصل شناختی کارڈ بھی ساتھ لے کر آنا ہو گا۔


ای پیپر