سگریٹ پر ٹیکس میں کمی نہیں آئیگی : حماد اظہر
24 جون 2019 (21:45) 2019-06-24

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے فی کلو تمباکو پر عائد جی ایل ٹی ٹیکس واپس 10 روپے پر لے جانے کا فیصلہ کر لیا، قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے زرعی مصنوعات کو وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر نے بتایاہے کہ سگریٹ پر ٹیکس میں کسی قسم کی کمی نہیں آئے گی،امید ہے ہم تمباکو سے114 ارب روپے ٹیکس اکٹھا کر لیں گے۔

 قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے زرعی مصنوعات کا اجلاس سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی صدارت میں ہوا،اجلاس کے دوران رکن کمیٹی ریاض فتیانہ وزارت خزانہ اور ایف بی آر پر برہم ہوگئے، ریاض فتیانہ نے کہا کہ ہماری کمیٹی نے 27 سفارشات دی ہیں جن میں سے 25 پر تو غور ہی نہیں کیا گیا ، دو باتیں جزوی طور پر مانی گئیں ہیں اس پر میں شدید تحفظات اور ناراضگی کا اظہار کرتا ہوں ،بجٹ ہم نے پاس کرنا ہے، کمیٹی اجلاس میں سیکرٹری خزانہ نہیں ہیں ،5 ہزار ارب سالانہ ٹیکس چوری ہے ،اس کا مطلب ہے وزارت خزانہ اور ایف بی آر ناکام ہو گئیں ہیں ،ان دونوں کو تحلیل کر دینا چاہیئے ،

ریاض فتیانہ احتجاجا کمیٹی سے واک آ وٹ کر کے جانے لگے تو اسپیکر اسد قیصر نے انہیں روک لیا،رکن کمیٹی ثنا اللہ مستی خیل نے کہا کہ ہم کاٹن نہ لگائیں تو اپٹما کیسے چلے گی ،روپیہ زراعت کے لیئے نہیں دیتے اور توقع کرتے ہیں کہ ذراعت کہیں سے کہیں چلی جائے، مشیر تجارت عبد الرزاق دائود نے کمیٹی کو بتایاکہ کاٹن اور ٹیکسٹائل ہماری معیشت میں بہت اہم ہیں، شوگر کی قیمتیں اتنی زیادہ کر دی گئی کہ کہ سارے کسان اس طرف چلے گئے ہیں، ہائی کوالٹی کاٹن پاکستان میں پیدا نہیں ہو رہی۔

وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر نے کہا کہ کاٹن پر ہر سال دو تین مرتبہ ڈیوٹی تبدیل ہوتی ہے ،کاٹن کی ہماری لوکل ڈیمانڈ 15 ملین بیل ہے،جبکہ پیداوار 9 ملین بیل ہے،معیشت چل ہی کپاس پر چل رہی ہے،حماد اظہر نے کمیٹی کو بتایا کہ گھی اور آٹے پر کوئی ٹیکس نہیں لگایا گیا،جو ذخیرہ اندوزی شوگر ملوں میں ہوتی ہے ،ان کے خلاف کارروائی کریں گے۔


ای پیپر