امریکہ نے مودی کو کھری کھری سنا دیں
24 جولائی 2019 (22:01) 2019-07-24

واشنگٹن :عمران خان کے دورہ امریکہ پر وائٹ ہاﺅس میں وزیر اعظم کا پرجوش استقبال بھارت کو ایک آنکھ نہ بھایا اور بوکھلاہٹ میں امریکی صدر پر ہی الزام لگا دیا ،جس کا منہ توڑ جواب امریکی صدر کے مشیر جلد ہی دیدیا ۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر کے چیف اکنامک ایڈوائزر لیری کڈلو سے پوچھا گیا کہ بھارت کہتا ہے کہ وزیراعظم نریندر مودی نے کشمیر پر ثالثی کا ڈونلڈ ٹرمپ کو نہیں کہا ، کیا یہ بات صدر ٹرمپ نے خود گھڑی ہے۔؟اس کے جواب میں ٹرمپ کے مشیر نے کہا کہ امریکی صدر خود سے کوئی بات نہیں گھڑتے، صدر کے بارے میں کوئی بات خود سے گھڑنے کا سوال انتہائی نا مناسب ہے، صدر ٹرمپ نے جو کہنا تھا وہی کہا ہے۔

عمران خان کے دورہ امریکہ پر ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان کو کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس سلسلے میں مودی نے بھی کردارادا کرنے کی درخواست کی تھی ۔

تاہم اس کے فوری بعد بھارتی وزارت خارجہ کا بیان سامنے آیا جس میں کہا گیا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے ایسی کوئی درخواست نہیں کی، بھارت کا کشمیر کے معاملے پر مستقل موقف ہے اور وہ یہ کہ یہ مسئلہ پاکستان اوربھارت باہمی طور پر حل کریں گے، شملہ معاہدے کی رو سے کوئی تیسرا فریق پاک بھارت باہمی معاملات میں مداخلت نہیں کرسکتا۔


ای پیپر