WHO slams rich states for hogging vaccines
24 فروری 2021 (17:36) 2021-02-24

جنیوا:عالمی ادارہ صحت نے دنیا کے امیر ممالک کا گھنائونا چہرہ بے نقاب کر دیا ،عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ٹیڈ روس ادہانوم نے انکشاف کیا کہ دنیا کے امیر ممالک کرونا ویکسین کیلئے غریب ممالک کے حق پر ڈاکہ ڈال رہے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق عالمی ادارہ صحت نے انکشاف کیا ہے کہ اس وقت کئی امیر ممالک اپنے پیسوں کے بل بوتے پر ویکسین بنانے والی کمپنیوں کیساتھ براہ راست رابطے میں ہیں اور اپنے ملک کو محفوظ بنانے کیلئے زیادہ سے زیادہ ویکسین خرید رہے ہیں ،عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ تمام ممالک کو چاہے وہ غریب ممالک ہو ں یا امیر سب کو ایک دوسرے کے حقوق کا خیال رکھنا ضروری ہے ۔

عالمی ادارہ صحت نے انکشاف کیاکہ اس وقت کئی امیر ممالک جن میں امریکہ ،یورپی یونین اور جرمنی جیسے ممالک شامل ہیں نے عالمی وبا کی ویکسین کیلئے غریب ممالک کو مالی امداد بھی فراہم کی لیکن ڈائٹریکٹر عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ ایسے پیسے کا کیا کرنا جس سے کرونا ویکسین خریدی ہی نہ جا سکے ۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر نے مزید کہا ون کیمپین نامی عالمی ادارے کی جانب سے گزشتہ ہفتے کہا گیا تھا کہ گروپ کی رکن سات رکن قومیتیں بشمول آسٹریلیا نے مل کر ضرورت سے سوا ارب زیادہ خوراکیں خریدی ہیں تاکہ اپنی آبادی کے ایک ایک فرد کو ویکیسن لگوا سکیں،ڈائریکٹر عالمی ادارہ صحت نے ان امیر ممالک کو بے نقاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر کسی ملک کے پاس پیسے زیادہ ہیں تو اس کا مطلب یہ نہیں کہ آپ ساری ویکسین خرید کر اپنے پاس رکھ لیں ،انہوں نے کہاکئی ممالک براہ راست ویکسین بنانے والی کمپنیوں سے ایڈوانس بکنگ کروا رہے ہیں تاکہ دیگر غریب ممالک کو ویکسین فراہمی نہ ہوسکے ۔

 عالمی ادارہ صحت نے کہا کہ ہم صرف ان ممالک کو ویکیسن دے سکتے ہیں جو کوویکس کے رکن ہیں۔ انہوں نے کہا کہ امیر ممالک کو کوویکس کے تحت ہونے والے معاہدوں کا احترام کرنا چاہیے۔


ای پیپر