خبردار ،چین نے امریکہ کو کھری کھری سنادی
24 اپریل 2020 (23:26) 2020-04-24

بیجنگ:چین نےکہاہےکہ کورونا وائرس کی اصلیت پر سیاست کرنے اور اس کا الزام دوسرے ممالک پر عائد کرنے کی کوئی بھی کوشش قابل قبول نہیں ،چین نوول کرونا وائرس کی ابتدا سے متعلق روسی موقف کی تعریف کرتا ہے جو پرمقصد، منصفانہ، سائنس پر مبنی اور عقلی موقف ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے کہا ہے کہ چین نوول کرونا وائرس کی ابتدا سے متعلق روسی موقف کی تعریف کرتا ہے جو پرمقصد، منصفانہ، سائنس پر مبنی اور عقلی موقف ہے ،پریس کانفرنس کے دوران کریملن کے ترجمان دیمتری پیسکوف کے ان ریمارکس پر تبصرہ کرنے کےسوال پرکیں جس میں انہوں کہا تھا کہ وائرس کی مصنوعی اصلیت کےبارے میں دعوے بے بنیاد ہیں اور کسی بھی ملک پر وافر سائنسی ثبوت کے بغیر الزامات ناقابل قبول ہیں.

یسکوف نے دو روز قبل صحافیوں کو بتایا تھا کہ چین اور روس نوول کرونا وائرس کیخلاف لڑائی میں قریب سے ہم آہنگی کررہے ہیں اور دونوں سربراہان مملکت نے فون پر گفتگو کے ذریعے اس طرح کے تعاون کو مستحکم کرنے کی اپنی سیاسی خواہش کا اظہار کیا ہے.چینی وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ نے کہا کہ چین اور روس آپس میں سب سے بڑے ہمسایہاور نئے دور میں ہم آہنگی کے جامع اسٹریٹجک پارٹنر ہیں۔

اعلی سطح کے باہمی اعتماد اور باہمی تعاون کے جذبے کے تحت، دونوں ممالک نے اس وبا کے خلاف جنگ میں ایک دوسرے کو بھر پور تعاون کیا ہے،چینی وزارت خارجہ کے ترجمان شوان گینگ نے کہا ایک ماہ کے اندر 2 مرتبہ دونوں سربراہان مملکت کے مابین ٹیلی فونک گفتگو سے اس وبا کے خلاف دوطرفہ تعاون کو مضبوط تقویت ملی ہے،دونوں فریق باہمی تعاون کو مستحکم، قریبی تعاون کو برقرار اور مشترکہ طور پر عالمی وبا کا مقابلہ کرنے پر دونوں رہنماؤں کے مابین طے پانے والے اتفاق رائے پر عمل درآمد کرینگے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان شوان گینگ نے کہا کہ وائرس کی ابتدا ایک سائنسی معاملہ ہے جس پر سائنسدانوں اور طبی ماہرین کو تحقیق کرنی چاہیے جس پر بین الاقوامی برادری کا مشترکہ اتفاق رائے ہے،کورونا وائرس کی اصلیت پر سیاست کرنے اور اس کا الزام دوسرے ممالک پر عائد کرنے کی کوئی بھی کوشش قابل قبول نہیں ہے،عالمی برادری کو چاہیے کہ انسانیت کے مشترکہ مستقبل کے حامل معاشرے کے وژن پر مبنی عالمی سطح پر صحت عامہ کی حفاظت کے لئے یکجہتی اور نیک نیتی کے ساتھ مل کر کام کرے۔


ای پیپر