جی بی 2 میں پولیس اور پی پی مظاہرین میں جھڑپیں ٗسرکاری املاک نذر آتش
23 نومبر 2020 (19:24) 2020-11-23

گلگت: گلگت بلتستان میں انتخابات کے نتائج کے بعد ابھی تک سیاسی جماعتوں کے احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور حلقہ جی بی 2 میں ممکنہ ہار کے اعلان سے پہلے ہی پاکستان پیپلز پارٹی کی طرف سے مبینہ دھاندلی کیخلاف احتجاج اس وقت خطرناک صورتحال اختیار کر گیا جب مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپ میں 3 سرکاری گاڑیوں اور املاک کو نذر آتش کر دیا گیا۔ 

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے گلگت بلتستان کے انتخابات میں مبینہ دھاندلی کا الزام لگا کر مظاہرہ کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سلسلہ میں جی بی 2 میں مقابلہ پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار جمیل احمد اور پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار فتح اللہ کے درمیان ہوا تھا جس میں پی ٹی آئی کے امیدوار نے صرف 2 ووٹوں کے فرق سے یہ نشست اپنے نام کر لی تھی۔ 

پی پی کی طرف سے دوبارہ گنتی کا مطالبہ کیا گیا جو الیکشن کمیشن نے تسلیم کر لیا۔ لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ دوبارہ گنتی کے بعد بھی تحریک انصاف کے امیدوار ہی جیت رہے ہیں  اور اس بار انہوں نے 2 ووٹوں کےبجائے 96 ووٹوں سے سبقت حاصل کر لی۔ جس پر پی پی نے یہ نتائج تسلیم کرنے سے انکار کر دیا۔ 

پی پی کی طرف سے نتائج کو تسلیم نہ کرنے پر مظاہرہ کا سلسلہ جاری تھا اور یہ الزام لگایا گیا کہ پی ٹی آئی کے امیدوار کو فتح دلوانے کیلئے الیکشن کمیشن کا ریکارڈ غائب کر دیا گیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس کی طرف سے پرامن احتجاج کرنے والے پی پی کے مظاہرین پر شیلنگ کی گئی اور ربڑ کی گولیاں چلائی گئیں جس کے بعد مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں شروع ہو گئیں جس میں پولیس کی 3 گاڑیوں کو آگ لگا دی گئی۔تازہ ترین خبروں کے مطابق انتظامیہ نے صورتحال پر قابو پا لیا ہے۔ 


ای پیپر