Neha Bhasan,sexual harassment,Hardwar,bollywood,singer,Jag Ghoomaya
23 نومبر 2020 (18:57) 2020-11-23

ممبئی : بھارت کی ممتاز فلمی گلوکارہ نیہا بھاسن نے اپنی زندگی کی کہانی بتانے ہوئے کہا ہے کہ انہیں زندگی میں کئی بار جنسی ہراسانی کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اس کا آغاز اس وقت ہوا جب انہیں ’’ہردوار‘‘(سکھوں کی مذہبی عبادت گاہ)میں دس سال کی عمر میں جنسی ہراسانی کا سامنا کرنا پڑا۔

ایک ایجنسی انٹرویو میں نیہا بھاسن نے اپنی زندگی کے کئی پوشیدہ پہلوئوں سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ وہ محض دس سال کی تھیں جب اپنی والدہ کے ساتھ سکھوں کی مذہبی عبادتگاہ ہردوار میں گئیں تو ایک شخص نے اپنے پوشیدہ مقام پر چھوا جس پر وہ وہاں سے بھاگ نکلیں۔ اس واقعہ کے بعد ان کی صحت پر اثرات پڑے اور وہ ذہنی مسائل کا شکار ہو گئیں۔

انہوں نے بتایا کہ ایک بار وہ ایک پرفارمنس کیلئے بھرے مجمع میں بھی ایسی غیر اخلاقی صورتحال کا سامنا کرنا پڑا جب انہیں لوگوں کی طرف جسم کے نازک حصوں پر ہاتھ محسوس ہوئے  اور آج کے دن تک ایسا کئی بار ہو چکا ہے ۔ انہوں نے اس موقع پر بھارتی فلم انڈسٹری سے متعلق واقعات پر بالکل بات نہیں کی اور محض یہ بتانے میں اکتفا کیا کہ انہیں اکثر اوقات فون پر جان سے مارنے اور جنسی زیادتی کی دھمکیاں ملتی رہتی ہے۔

یاد رہے کہ نیہا بھاسن معروف بھارتی گلوکار ہیں جنہوں نے دل دیاں گلا ں ٗ جگ گھومیا جیسے گانے میں راحت فتح علی خان ٗ عاطف اسلم اور کئی بھارتی ممتاز گلوکاروں کے ساتھ پرفارم کیا ہے۔ 


ای پیپر