November, coldest day, New Delhi, pandemic, third wave, WHO
کیپشن:   فائل فوٹو
23 نومبر 2020 (15:28) 2020-11-23

نومبر کے آتے ہی پوری دنیا میں موسم میں نمایاں تبدیلی آگئی ہے اور سرد کی شدت میں اضافہ ہوگیا ہے، اس تبدیلی کے اثرات نئی دہلی میں پائے گئے ہیں جہاں 17 سال بعد نومبر کا سب سے سرد ترین دن ریکارڈ کیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق موسمِ سرما نے شمالی ہندوستان کے بڑے حصوں میں اپنی برفیلی گرفت مضبوط کر لی ہے، دارالحکومت نئی دہلی میں کم سے کم درجہ حرارت 9.6 ریکارڈ کیا گیا ، جو 2003ء کے بعد سے اب تک کا کم ترین درجہ حرارت ہے۔ دہلی اور اس کے آس پاس کے علاقے شدید سردی کی لپیٹ میں ہیں، اس سے قبل رواں سال جنوری میں نئی دہلی کا 1901ء کے بعد سب سے سرد ترین موسم ریکارڈ کیا گیا تھا، جس نے سردی کا 118 سالہ ریکارڈ توڑا تھا۔

ادھر برطانوی محکمہ موسمیات نے دس برس کے سخت ترین موسم سرما کی پیش گوئی کی ہے، اسکاٹ لینڈ میں موسم کا سرد ترین دن ہوگا، کرسمس کے موقع پر درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گرنے کا امکان ہے، رواں ہفتے کے آخر میں شمالی انگلینڈ میں برفانی طوفان آسکتے ہیں۔

پوری دنیا میں موسم کی تبدیلی کے ساتھ ہی عالمی وبا کی دوسری لہر میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ عالمی ادارہ صحت نے خبردار کيا ہے کہ اگر حکومتوں نے دوسری لہر سے نمٹنے ميں مناسب اقدامات نہ کيے، تو آئندہ برس کے اوائل ميں عالمی وبا کی تيسری لہر کا خطرہ بھی موجود ہے۔

ڈبليو ايچ او کے خصوصی نمائندے ڈيوڈ نابارو کا کہنا ہے کہ اگر بنيادی ڈھانچہ کھڑا نہ کيا گيا، تو دنیا کو وبا کی ايک اور لہر کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے عالمی وبا کے خلاف ایشیائی ممالک کے اقدامات کو سراہا، جہاں متاثرین کی تعداد نسبتاً کم ہے۔ ڈاکٹر نابارو کا کہنا تھا کہ یورپی ممالک وبا کے حوالے سے موثر اقدامات کرنے میں ناکام رہے ہیں۔


ای پیپر