طیارہ حادثہ کی ابتدائی رپورٹ آگئی
23 May 2020 (14:39) 2020-05-23

کراچی :سول ایوی ایشن کے شعبہ ائیرسائیڈ نے طیارہ حادثے میں رن ویکی انسپیکشن رپورٹ تیار کرلی ہے، جس میں کہا گیا طیارے کے بائیں انجن نے رن وے پر4500فٹ آگے جا کر جبکہ 5500فٹ دور جاکردائیں انجن نے بھی زمین کوٹچ کیا۔

انسپیکشن رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کپتان نے طیارے کو لینڈ کرانے کی دو بار کوشش کی، رن وے پر اترنے کی کوشش کے دوران طیارے کے لینڈنگ گیئرزبندتھے، کپتان نے لینڈنگ کے وقت اے ٹی سی کو ہنگامی لینڈنگ کی اطلاع نہیں دی۔ طیارے کے بائیں انجن نے رن وے پر4500فٹ آگے جاکرٹچ کیا جبکہ 5500فٹ دور جاکردائیں انجن نے بھی زمین کوٹچ کیا، رن وے پر6ہزارسے7ہزارفٹ پردونوں انجن کے نشانات ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا طیار ے کے بیلی نے رن ویک کوٹچ نہیں کیاکپتان نے دوبارہ ٹیک آف کرلیا، کراچی ایئرپورٹ کارن وے9ہزارسے10ہزار فٹ لمباہے، دوبارہ طیارہ ٹیک آف ہونے کے بعد لینڈنگ کی کوشش میں گر کر آبادی میں تباہ ہوگیا۔پی آئی اے کے طیارے میں 99مسافر اور 8 کریو ممبر سوار تھے،حادثے کے شکار طیارے کا بلیک باکس بھی مل چکا ہے، سیفٹی انویسٹی گیشن بورڈ نے بلیک باکس اور طیارے کا کچھ حصہ اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔


ای پیپر