کیکڑا ون کی کامیابی کے امکانات صرف 12فیصد تھے
23 May 2019 (21:11) 2019-05-23

اسلام آباد:پارلیمنٹ کی ذیلی پبلک اکا ئونٹس کمیٹی میں او جی ڈی سی ایل کے مینجنگ ڈائریکٹر نے انکشاف کیا ہے کہ کیکڑا ون بلاک سے تیل وگیس کے ذخائر ملنے کی کامیابی کے امکانات صرف 12فیصد تھے، وزارت پیٹرولیم سمیت سب کے علم میں یہ بات تھی۔

پارلیمنٹ کی پبلک اکا ئونٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس کنوینئر سردار ایاز صادق کی صدارت میں ہوا،اجلاس میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام،وزارت قانون وانصاف،نجکاری اور پیٹرولیم ڈویژن کے آڈٹ پیراز کا جائزہ لیا گیا،کمیٹی نے وزارت قانون کی سپلیمنٹری گرانٹس پارلیمنٹ سے منظوری کے بعد کمیٹی میں پیش کرنے کی ہدایت کی۔

سردار ایاز صادق نے کہا گرانٹس کی بہت بڑی رقم سرینڈر کی گئی ہے ،اتنی سیونگ کیوں ہوئی ہے ،جس پر وزارت قانون حکام نے کہا کہ آئندہ سے ہم کم گرانٹ مانگا کریں گے،آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا 2008 میں چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل کے زیر استعمال گاڑی ڈرائیور کے گھر سے چوری ہونے کے باعث 17 لاکھ کا نقصان ہوا،اسلامی نظریاتی کونسل حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ ایف آئی آر نامعلوم افراد کے خلاف درج کی گئی ،سردار ایاز صادق نے کہا کہ 15 دنوں میں انکوائری کر کے ہمیں رپورٹ دی جائے۔

آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ او جی ڈی سی ایل کی جانب سے خواجہ ون کنویں کی کھدائی کے کام سے دستبرداری کے باعث 1224 ملین روپے کے اخراجات ضائع ہو گئے،اجلاس میں سمندر میں کیکڑا ون بلاک سے تیل وگیس کے ذخائر کی تلاش کا معاملہ بھی زیر غور آیا ،او جی ڈی سی ایل کے ایم ڈی زاہد میر نے کمیٹی کو بتایا کہ کیکڑا بہت بڑا اسٹرکچر ہے ۔


ای پیپر