چین جنگ کیلئے تیار ہے ۔۔۔چینی وزارت خارجہ نے ٹرمپ کو انتباہ کر دیا
23 مارچ 2018 (19:25) 2018-03-23

بیجنگ: چین نے کہا ہے کہ چین ٹرمپ کی جانب سے تجارتی جنگ کے مقابلے کے لئے تیار ہیں ، تجارتی جنگ چھڑنے کی امید نہیں ر کھتے لیکن اس سے ڈرتے بھی نہیں ، چین کی ایک اِنچ سرزمین بھی ،ملک سے الگ کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی،امریکہ کو تائیوان سے متعلق امور میں محتاط رویہ اپنانے کی ضرورت ہے ، عالمی برادری کے ساتھ مل کرافغانستان میں امن و استحکام کے لئے مزید مدد اور حمایت فراہم کرے گا۔

چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے تجارتی جنگ کا آغاز کیا ہے جس پر چینی وزارت خارجہ کی ترجمان ہوا چھون اینگ نے پریس کانفرنس میں کہا کہ چین اپنے مفادات کی ضمانت اور تحفظ کے لئے تیار ہے ۔ہوا چھون اینگ نے کہا کہ امریکہ نے اپنے اقدامات سے عالمی تجارتی تنظیم کے اصولوں کو نظر انداز کرتے ہوئے یک طرفہ اور تجارتی تحفظ پسندی کا اظہار کیا ہے ،اورچین اس کی سخت مخالفت کرتا ہے ۔ ہوا چھون اینگ نے کہا کہ چین تجارتی جنگ چھڑنے کی امید نہیں رکھتا ہے لیکن اس سےڈرتا بھی نہیں ہے ۔ چین کسی بھی چینج سے نمٹنے کی صلاحیت اور اعتماد رکھتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ تائیوان کا مسئلہ چین کے کلیدی مفادات سے وابستہ ہے ۔ چین امریکہ سے ایک چین کی پالیسی اور باہم طے شدہ تین مشترکہ اعلامیوں پر عمل پیرا رہنے کا مطالبہ کرتا ہے ۔ امید ہے کہ مسئلہ تائیوان سے متعلق امور معقول انداز میں طے کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ چین کی ایک اِنچ سرزمین کو بھی چین سے الگ کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔ چین امید کرتا ہے کہ متعلقہ فریق تائیوان کے امور پر احتیاط سے کام لیں گے۔ہوا چھون اینگ نے کہا افغانستان کے مسلے کے حوالے سے اعلی سطح کا اجلاس ستائیس تاریخ کو ازبکستان کے شہر تاشقند میں ہوگا ۔ اجلاس میں چین کی نمائندگی چین کے نائب وزیر خارجہ لی پاو تونگ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ چین افغانستان میں امن و امان ، تعمیر نو اورقومی مصالحت کے لئے تمام کوششوں کی بھر پور حمایت کرتا ہے ۔ چین عالمی برادری کے ساتھ مل کرافغانستان میں امن و استحکام کے لئے مزید مدد اور حمایت فراہم کرے گا۔


ای پیپر