فائل فوٹو

ویڈیو اسکینڈل کیس، عدالت کا ایف آئی اے کو انکوائری جلد مکمل کرنے کا حکم
23 جولائی 2019 (15:23) 2019-07-23

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے براہ راست سپریم کورٹ میں ویڈیو اسکینڈل کیس سن کر فیصلہ کرنے کی مخالفت کر دی۔

سپریم کورٹ میں احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل نے عدالت سے استدعا کی کہ سپریم کورٹ براہ راست اس کیس کو سن کر فیصلہ نہ کرے۔ سپریم کورٹ کا براہ راست فیصلہ کرنے سے ہائیکورٹ میں زیر سماعت اپیل متاثر ہوگی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کو اختیار حاصل ہے کہ وہ نئے شواہد اکٹھے کرنے کا حکم دے یا پہلے سے موجود شواہد پر فیصلہ دے۔ ہائیکورٹ دوبارہ ٹرائل کا حکم بھی دے سکتا ہے، ٹرائل کورٹ کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے یا برقرار رکھنے کا اختیار صرف اسلام ہائیکورٹ کو ہی حاصل ہے، کمیشن صرف رائے دے سکتا ہے۔

عدالت نے ایف آئی اے کو انکوائری مکمل کرکے رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت 3 ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی۔


ای پیپر