فوٹو بشکریہ فیس بک

منی بجٹ میں 200 ارب روپے کے لگ بھگ ٹیکس لگنے کا امکان
23 جنوری 2019 (12:13) 2019-01-23

اسلام آباد: رواں مالی سال کا دوسرا منی بجٹ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر آج قومی اسمبلی میں پیش کریں گے۔ موبائل فون صارفین کی موجیں ختم، 50 ہزار ماہانہ تنخواہ والے بھی ٹیکس دینے کیلئے ہوجائیں تیار۔

امپورٹڈ موبائل فونز اور اٹھارہ سو سی سی سے بڑی گاڑی اور سگریٹ نوشی کی عیاشی بھی جیب پر پڑے گی بھاری۔ نئے منی بجٹ میں پانچ سو روپے تک کے موبائل فون بیلنس پر ٹیکس کٹے گا۔ موبائل فون کے استعمال پر ٹیکس لگانے کی بھی تجویز ہے۔ پالتو جانوروں کی خوراک اور امپورٹد ملبوسات بھی مہنگے ہوجائیں گے۔

تنخواہ دار طبقے پر ٹیکس کی چھوٹ بارہ لاکھ سے کم کرنے کی بھی تجویز ہے۔ ایف بی آر کو جاری مالی سال میں 173 ارب روپے شارٹ فال کا سامنا ہے۔

منی بجٹ میں 200 ارب روپے کے لگ بھگ ٹیکس لگنے کا امکان ہے۔ لگژری گاڑیوں پر درآمدی ڈیوٹی میں 10 فیصد اور موبائل فون صارفین پر درآمدی ٹیکس بڑھانے کی تجویز ہے۔ 6 ماہ میں 150 ارب روپے اکٹھے کرنے کیلئے سرکاری ملازمین کی قابل ٹیکس سالانہ آمدن 8 لاکھ روپے سے کم کر کے 4 لاکھ کیے جانے کا امکان ہے۔

وفاقی حکومت کی جانب سے نئے منی بجٹ کو معاشی اصلاحات کے پیکج کا نام دیا گیا ہے۔


ای پیپر