Indian Muslims, Delhi riots, one year, BJP government, PM Modi
23 فروری 2021 (14:06) 2021-02-23

ممبئی: دہلی فسادات کو ایک سال بیت گیا ، آر ایس ایس کے غنڈوں کی جانب سے متنازعہ شہریت قوانین پر احتجاج کرنے والے مسلمانوں کو چن چن کر نشانہ بنایا گیا ۔

خیال رہے کہ مودی سرکار کی سرپرستی میں ہندو انتہاپسندوں نے مسلمانوں پر منظم حملے کیے۔ 23 فروری سے 29 فروری 2020 کے دوران دہلی میں 36 مسلمانوں کو شہید کیا گیا۔

دہلی میں متنازعہ شہریت قوانین پر احتجاج کرنے کے دوران فسادات میں 53 افراد ہلاک ہوئے ، جن میں 36 مسلمانوں کی شہادتیں شامل ہیں ۔ زخمی ہونے والے سیکڑوں افراد میں بھی بڑی تعداد مسلمانوں کی تھی ۔

گزشتہ سال جولائی میں شائع کی جانے والی بھارتی اقلیتی حقوق کمیشن کی رپورٹ کے مطابق، دہلی فسادات میں مسلمانوں کو نشانہ بنانے میں پولیس بھی شامل رہی ۔ ان فسادات ميں مسلمانوں کے مکانات ، دکانوں اور ديگر اثاثہ جات پر حملے کیے گئے ۔ انتہاپسندوں نے مساجد ، مدرسوں اور مسلمانوں کے گھروں کو نقصان پہنچایا ۔

واضح رہے کہ آجکل بھارتی کسان مودی سرکار کی متنازعہ قانون سازی کے خلاف سراپا احتجاج ہیں ۔ کسانوں کا یہ احتجاج پیچھلے کئی ماہ سے جاری ہے اور بھارتی کسانوں کا کہنا ہے کہ جب تک مودی سرکار اُن کے مطالبات تسلیم نہیں کرتی اُن کا احتجاج جاری رہے گا ۔


ای پیپر