yasmeen rashid,dr ayesha ali,daughter,king Edward,medical collage,merit,appointment
23 فروری 2021 (13:37) 2021-02-23

لاہور : صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ غلطی یہ ہوئی ہے کہ ڈاکٹر عائشہ ان کی بیٹی ہے جبکہ ان کی تقرری میرٹ کے عین مطابق ہوئی ہے ۔

ڈاکٹر عائشہ علی کی کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج میں تقرری کے حوالے سے ایک انٹرویو میں ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ میرا اپنی بیٹی کی تقرری سے کوئی تعلق نہیں ہے۔تقرری میرٹ پر ہوئی ہے۔اگر سوال کرنا ہے تو کنگ ایڈورڈ کے بورڈ سے کیا  جائے۔

انہوں نے کہا کہ 2018 میں میری بیٹی نے ایم آر سی او جی کیا۔اسے میرٹ پر لیا گیا ہے اور میرٹ پر لینے کے بعد صرف یہ نہیں کہ اسے اکیلی کو لیا گیا۔ گائناکالوجیکل بھی لے لی گئی۔مجھے سمجھ نہیں آئی کہ آج اس کے اوپر اتنا بڑا سکینڈل بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔اس کا گناہ صرف یہ ہے کہ وہ میری بیٹی ہے۔غلطی اس سے یہ ہو گئی کہ وہ بیٹی ہے۔مجھے یہ سمجھ نہیں آتی کہ باہر سے اب ڈاکٹرز پاکستان آکر سپیشلائزیشن سیکھ کر آئیں گے اور یہاں اپلائی کریں گے۔وہ ضروری ہے یا اس طرح کے سکینڈل ضروری ہیں۔

مزید براں ڈاکٹر عائشہ علی کا ایک بیان میں کہنا ہے کہ ایف سی پی ایس کرنے کے بعد برطانیہ سے ایم آر سی او جی کیا اور رائل کالج سے فٹل میڈیسن میں تربیت لینے کے بعد بڑے ٹیچنگ ہسپتال سے منسلک ہوں۔ڈاکٹرز پاکستان آکر خدمت کرنا چاہتے ہیں۔انہیں خوش آمدید کہا جائے۔میری تقرری میرٹ پر ہوئی۔یہ باتیں سن کر  دل آزاری ہوئی ہے۔


ای پیپر