TLP, negotiations, Shahid Khaqan Abbasi, PTI government, PM Imran Khan, Sheikh Rasheed
23 اپریل 2021 (20:47) 2021-04-23

استنبول :پاکستان نے افغانستان میں امن کیلئے اپنا موقف دیتے ہوئےواضح کر دیا کہ افغان مسئلہ کا کوئی فوجی حل نہیں ،افغان مسئلہ کاحل صرف اور صرف بات چیت ہے ،مذاکرات کے ذریعے ہی اس مسئلے کا حل پہلے نکالاگیا تھا اور اب بھی اس مسئلہ کا حل جنگ نہیں بات چیت ہے ۔

تفصیلات کے مطابق استنبول میں پاکستان اور ترکی کے زرائے خارجہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ افغان مسئلہ کا حل جنگ نہیں ، صرف بات چیت ہے ،پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود  قریشی کا کہنا تھا افغان صورتحال سے افغان عوام کے بعد پاکستان سب سے زیادہ متاثر ہوتا ہے،افغان طالبان پر بھی زور دیتے ہیں کہ وہ اپنے ملک میں امن کیلئے کردار ادا کریں،کیونکہ پر امن افغانستان ہی پاکستان کے مفاد میں ہے ۔

 وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی دو روزہ سرکاری دورے پر ترکی پہنچ گئے ہیں،شاہ محمود قریشی پاکستان ، افغانستان، ترکی کے سہ فریقی اجلاس میں شرکت کریں گے، وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی ترک وزیر خارجہ میولوت چاوش اوغلو کی دعوت پر ترکی کے دو روزہ سرکاری دورے پر آئے ہیں۔ وزیر خارجہ ترک ہم منصب سمیت ترکی کی اعلیٰ قیادت کے ساتھ ملاقاتیں کریں گے۔وزیر خارجہ ترکی ،پاکستان اور افغانستان پر مشتمل سہ فریقی اجلاس میں شریک ہوں گے۔ 

 اجلاس میں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی افغان امن عمل میں ہونے والی حالیہ پیش رفت پر بات چیت کریں گے۔ افغان قیادت میں افغانوں کو قبول سیاسی عمل کے ذریعے پرامن اور مستحکم افغانستان کے مشترکہ مقصد کے حصول پر تبادلہ خیال کریں گے۔ پاکستان کی قابل قدر کوششوں کو بھی اجاگر کیا جائے گا۔


ای پیپر