22 ستمبر 2020 (15:08) 2020-09-22

لاہور :  پاکستان ایسوسی ایشن آف پرائیویٹ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز   " پامی"کے نو منتخب صدر   پروفیسر ڈاکٹر چوہدری عبدالرحمان نے کہا ہے کہ پامی  کی  کوشش ہے کہ تعلیمی نظام کو بہتر کریں۔

نومنتخب صدر کا کہناتھا کہ   پامی ڈینٹل اور میڈیکل کالجز کی نمائندہ جماعت ہے، اس وقت بڑا ایشو قومی سطح پر تعلیم کے بہتر امور کی کوشش کرنا ہے۔ان کا مزید کہناتھا کہ ہمارے کالج میں ہاورڈ کے کوالیفائیڈ ڈاکٹرز پڑھا رہے ہیں، انٹرنیشنل باڈی نے آپ کو واچ لسٹ پر رکھا ہوا ہے اور انہوں نے آپ کو شوکاز نوٹس دیئے ہوئے ہیں۔ 

پروفیسر ڈاکٹر چودھری عبدالرحمان  پاکستان کے ڈاکٹر بیرون ملک بہتر طریقے سے روزگار کما رہے ہیں،اگر پاکستان نے اس معاملے میں بہتر کردار ادا نہ کیا تو بھارت اس کی جگہ لے لے گا،  ہمارے ہاں جو ڈاکٹر کوالیفائیڈ ہوتا ہے اس کیلئے کوشش ہے اسے کسی جگہ مشکل پیش نہ آئے۔

ہمارے ڈاکٹرز کو اچھا انسان بننے کی بہت زیادہ ضرورت ہے، انہیں لیڈر شپ اور ٹیم ورک سکھانا ہے۔ کوشش کرنی ہے انہیں بہترین ڈاکٹر ہونے کے ساتھ بہتر لیڈر بھی بنایا جائے۔

ومنتخب صدر   پروفیسر ڈاکٹر چودھری عبدالرحمان  ہمارے ہاں ٹریننگ کا بہتر نظام کوئی نہیں ہے۔وی ایچ ایس ڈیڑھ دو ارب روپے پرائیویٹ کالجز سے وصول کرتے ہیں، وی ایچ ایس سے پوچھنا ہے کیا ان کا کوئی ٹیچنگ اسپتال  موجود ہے۔

ان کا مزید کہناتھا کہ کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج اور پنجاب یونیورسٹی 100 سال پرانے ادارے ہیں، پامی نے ریسرچ کلچر کو پروموٹ کرنا ہے ۔ پامی اپنی فیکلٹی کیلئے بہترین ٹریننگ کا انتظام کرے گی۔ کورونا نے تمام ممالک کے ساتھ پاکستان کے تعلیمی نظام کو بھی متاثر کیا۔

پاکستان ایسوسی ایشن آف پرائویٹ میڈیکل اینڈ ڈینٹل انسٹی ٹیوشنز کے صدر پروفیسر چودھری عبدالرحمان کا اہم خطاب جاری 

پاکستان ایسوسی ایشن آف پرائیویٹ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالجز   " پامی"تنظیم کے اغراض و مقاصد کیا ہیں؟

صحت کی تعلیم کے اداروں کے مسائل اور تحفظات کیا ہیں؟


ای پیپر