PDM will be responsible for complete lockdown results: PM Imran Khan
22 نومبر 2020 (12:53) 2020-11-22

اسلام آباد:وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں کورونا کی دوسری لہر تشویشناک ہے ، 15 روز کے وران کورونا مریضوں کی وینٹی لیٹرپرمنتقلی بڑھی ہے جبکہ پی ڈی ایم اپنے جلسوں سے انسانی زندگیاں خطرے میں ڈال رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کیسز کی شرح یہی رہی تو مکمل لاک ڈائون پر مجبور ہوں گے،جس کے نتائج کی ذمہ دار پی ڈی ایم ہوگی اور واضح کردوںکہ یہ لاکھوں جلسے کرلیں این آر او نہیں ملے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ بہت سے ممالک میں مکمل لاک ڈائون ہے، پشاورمیں وینٹی لیٹر پر جانے والے کورونامریضوں کی شرح 200فیصد رہی،، ملتان میں بھی وینٹی لیٹرپرجانیوالے مریضوں کی شرح 200فیصد رہی جبکہ کراچی 148 ،لاہور 114،اسلام آبادمیں 65فیصد مریض وینٹی لیٹرپرگئے۔

واضح رہے کہ پاکستان میں کورونا وائرس تباہی پھیلانے لگا ،مہلک وائرس 24 گھنٹے میں 59جانیں لے گیا جبکہ اموات کی تعداد 7ہزار 662ہوگئی ہے اور2ہزار 664 نئے کیس رپورٹ ہوئے ۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر(این سی او سی )کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق ملک بھر میں مصدقہ کیسز کی تعداد 3لاکھ 74ہزار 173 ہوگئی ، ایک ہزار 653 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے جبکہ 24گھنٹے میں 897مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔

حکومت نے عندیہ دیا ہے کہ اگر کورونا کی صورتحال بہتر نہ ہوئی تو دوبارہ سخت لاک ڈاﺅن کی طرف جا سکتے ہیں، عوام کو چاہیے کہ وہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں تاکہ اس مرض کو شکست دی جا سکے۔ ادھر عالمی ادارہ صحت نے بھی ایس او پیز پر عملدرآمد کی اہمیت اجاگر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر 95 فیصد افراد صرف فیس ماسک ہی پہننا شروع کر دیں تو کسی ملک کو لاک ڈاﺅن لگانے کی ضرورت ہی پیش نہ آئے۔

ڈبلیو ایچ اور کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ سماجی رابطے رکھنا ممکن نہیں ہے لیکن احتیاطی تدابیر اختیار کرنا عوام کے بس میں ہے۔ انہوں نے یورپ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ وہاں کی تقریباً ساٹھ فیصد عوام ہی فیس ماسک استعمال کرتی ہے۔


ای پیپر