راﺅ انوار کی کراچی منتقلی ، اس وقت کہاں ہیں؟عدالتی کاروائی میں اہم پیش رفت
22 مارچ 2018 (15:58)

کراچی : راﺅ انواز کی گرفتاری سے قبل ان کا منظر عام سے غائب ہونا کسی ڈان سے کم نہیں ۔وہ ایسے غائب ہوئے کہ ملکی فورسز کے لئے پکڑنا مشکل ہو گیا ۔بالآخر راﺅ انوار نے اپنی گرفتاری بھی ایک نئے سٹائل سے خود ہی سپریم کورٹ میں جا کر دی ۔معطل ایس ایس پی کا گٹھ جوڑ کن لوگوں سے ملتا ہے یہ تو آنے والا وقت ہی بتا ئے گا ۔گزشتہ روز سپریم کورٹ میں گرفتاری کے بعد معطل ایس ایس پی راﺅ انوار کو کراچی منتقل کرنے کے احکامات دئیے گئے ۔ کراچی منتقلی کے دوران راﺅ انوار کی لی جانے والی تصویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ بالکل پر اعتماد نظر آرہے ہیں ۔

انسداد دہشت گردی عدالت نے نقیب اللہ قتل کیس میں گرفتار معطل سینیئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس اسی پی) رائو انوار کو 30 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دے دیا۔راو¿ انوار کو انتہائی سخت سیکیورٹی میں کلفٹن میں واقع انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں بند کمرے میں نقیب قتل کیس کی سماعت ہوئی۔ اس موقع پر تفتیشی افسر ایس ایس پی انویسٹی گیشن عابد قائم خانی نے عدالت سے 30 روز کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ سیکیورٹی مسائل ہیں، ملزم کو روزروز پیش نہیں کرسکتے۔

عدالت نے رائو انوار کے وکیل سے دریافت کیا کہ ملزم کے 30 روزہ جسمانی ریمانڈ پر انہیں کوئی اعتراض تو نہیں، اس پر رائو انوار کے وکیل جاوید چھتاری نے کہا کہ مجھے پتا ہے تفتیش کے قانونی تقاضے ہوتے ہیں اس لیے کوئی اعتراض نہیں۔عدالت نے پولیس کی استدعا منظور کرتے ہوئے ملزم کو 21 اپریل تک تحویل میں دے دیا۔پولیس نے ملزم رائو انوار کو سخت سیکیورٹی میں ملیر کینٹ منتقل کردیا۔کمرہ عدالت سے باہر آنے پر صحافی نے رائو انور سے سوال کیا کہ کیا آپ کوامید ہے کہ انصاف ملےگا؟ رائو انوار نے جواب دیا کہ انشا اللہ،انصاف ملے گا، اسی امید پرتوآیا ہوں۔

نقیب اللہ قتل کیس میں معطل ایس ایس پی رائو انوار کی اسلام آباد سے کراچی منتقلی کے دوران طیارے میں کس کے ساتھ کیا گفتگو ہوئی؟سپریم کورٹ کے حکم پر گرفتار رائو انوار کو اسلام آباد سے نجی ایئرلائن کی پروز کے ذریعے کراچی منتقل کر دیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ رائو انوار کو پولیس نے ملیر کینٹ تھانے منتقل کر دیا ہے۔ذرائع کا بتانا ہے کہ رائو انوار طیارے میں خوشگوار موڈ میں اور پر اعتماد نظر آ رہے تھے۔

ذرائع کے مطابق رائو انوار نے طیارے میں فون پر اپنے گھر والوں سے بات کی اور انہیں اپنی خیریت سے آگاہ کیا۔ذرائع نے بتایا کہ طیارے میں موجود مسافروں نے رائو انوار کے ساتھ سیلفی لینے کی خواہش کا اظہار بھی کیا لیکن معطل ایس ایس پی نے سیلفی کھنچوانے سے انکار کردیا۔


ای پیپر