کراچی طیارہ حادثہ ،تحقیقاتی رپورٹ میں سنسنی خیز انکشافات
22 جون 2020 (17:49) 2020-06-22

کراچی : کراچی میں پیش آنے والے پی ا?ئی اے طیارہ حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ وزیراعظم کو پیش کردی گئی ہے جس میں قومی ائیرلائن اور سول ایوی ایشن کو ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے ملاقات کی اور کراچی طیارہ حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ پیش کی جب کہ وزیر ہوا بازی نے وزیراعظم کو رپورٹ پر بریفنگ بھی دی۔ رپورٹ میں قومی ائیرلائن اور سول ایوی ایشن کو حادثے کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا ہے اور حادثات کی روک تھام میں پی آئی اے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کا طریقہ کاربھی ناکام قرار دیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق رپورٹ میں طیارے کے کاک پٹ کریو اور ائیر ٹریفک کنٹرولر کو بھی حادثے کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے جب کہ حادثے کی وجوہات میں طیارے میں فنی خرابی کو خارج از امکان قرار نہیں دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں طیارے کے ڈیٹا فلائٹ ریکارڈر، کاک پٹ وائس ریکارڈر سے ملنے والی معلومات، لاہور سے کراچی پرواز کا ائیرٹریفک کنٹرول سے حاصل ریکارڈ بھی میں شامل ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لینڈنگ کے وقت طیارے کیکاک پٹ کریو نے ائیرٹریفک کنٹرولرکی ہدایات کو نظر انداز کیا اور ائیرٹریفک کنٹرولربھی اپنی ہدایات پرعمل درآمد کرانیمیں ناکام رہا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حادثے کے شکار طیارے کے آلات اور سسٹمز کی جانچ کا کام ابھی جاری ہے۔


ای پیپر