مسئلہ کشمیر کیلئے ٹرمپ نے ثالثی کی پیشکش کر دی
22 جولائی 2019 (22:57) 2019-07-22

واشنگٹن:امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مسئلہ کشمیر کے حل میں ثالثی کی پیشکش کردی۔

وائٹ ہاﺅس آمد پر صدر ٹرمپ نے گرمجوشی کیساتھ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کا استقبال کیا ،اس مو قع پر شاہ محمود قریشی بھی موجود تھے۔

وائٹ ہاﺅس میں ملاقات کے دوران دونوں رہنماﺅں نے مسکراہٹ کا بھی تبادلہ کیا ،اس اہم ملاقات میں ٹرمپ نے پاکستان کو مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے ثالثی کی پیشکش بھی کر دی ،ٹرمپ کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارتی وزیر اعظم مودی نے بھی کہا تھا ،انہوں نے کہا اس وقت پاکستان میں عظیم لیڈر ہے ،ماضی میں پاکستان نے ہمارے ساتھ تعاون نہیں کیا جس کی وجہ سے 1.3 ارب ڈالر کی امداد بند کر دی گئی تھی۔

ٹرمپ نے مزید کہا کہ پاکستانی قوم ایک عظیم قوم ہے ،وہاں کے لوگ بہت محنتی اور سمارٹ بھی ہیں ،اس موقع پر ٹرمپ نے کہا کہ عمران خان اس وقت پاکستان کے مقبول لیڈر ہیں۔

فواد چوہدری نے اس ملاقات میں اہم کامیابی کا ذکر کرتے ہوئے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے پاکستان کو فائیو جی ٹیکنالوجی میں تعاون کی پیشکش بھی کی۔

ٹرمپ نے پاکستان کے کردار کی تعریف کرتے ہوئے کہا پاکستان مستقبل میں افغانستان میں لاکھوں جانیں بچانے کا باعث بنے گا،امریکی صدر نے پاکستان افغانستان میں ہماری بہت مدد کررہاہے ۔

عمران خان کے ہمراہ وائٹ ہاﺅس میں میڈیا سے گفتگو کے دوران ایک صحافی نے ٹرمپ سے سوال کیا کہ ’ آپ نے کولیشن سپورٹ فنڈ کی مد میں پاکستان کی امداد بند کردی تھی، کیا آپ یہ امداد بحال کریں گے۔‘ صحافی کے سوال پر امریکی صدر نے کہا کہ وہ پاکستان کو ایک اعشاریہ 3 ارب ڈالر کی امداد دینا چاہتے تھے لیکن سابقہ حکومت نے ہمارے ساتھ تعاون نہیں کیا۔

انہوں نے عمران خان کی طرف دیکھتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم بننے کے بعد سے اس ملاقات کا منتظر تھا، آپ سے پہلے ہمارے لیے پاکستان کچھ نہیں کررہا تھا بلکہ ہمارے ایجنڈے کے خلاف کام کر رہا تھا۔ ہم پاکستان کے ساتھ بہت ہی اہم چیزوں پر کام کررہے ہیں، پاکستان ایک عظیم ملک ہے اور وہاں کے لوگ عظیم ہے۔

وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان کیلئے امریکہ انتہائی اہمیت کا ملک ہے کیونکہ دونوں ممالک نے مل کر دہشتگردی کے خلاف جنگ لڑی ہے، برصغیر میں اربوں لوگ مسئلہ کشمیر کی وجہ سے یرغمال بن چکے ہیں،وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ انہیں دورہ امریکہ کی دعوت صدر ٹرمپ نے دی تھی، وزیر اعظم بننے کے بعد سے وہ اس ملاقات کے منتظر تھے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مسئلہ کشمیر میں ثالثی کی پیشکش کی گئی تو وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ برصغیر میں اربوں لوگ مسئلہ کشمیر کی وجہ سے یرغمال بن چکے ہیں ، بھارت کے ساتھ بات چیت کے ذریعے مسئلہ حل کرنے کی بھرپور کوشش کی،وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان امریکہ سے جو وعدے کرے گا اسے نبھائے گا، پاکستان کیلئے امریکہ انتہائی اہمیت کا ملک ہے دہشتگردی کے خلاف ہم نے مشترکہ جنگ لڑی ہے، نائن الیون کے بعد سے پاکستان اور امریکہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پارٹنرز ہیں۔ افغان تنازعہ میں پاکستان نے فرنٹ لائن کا کردار ادا کیا ہے۔


ای پیپر