LDA,construction,availability,sports complexes,postponed
22 جنوری 2021 (13:40) 2021-01-22

 لاہور( احمد قریشی) فنڈز کی عدم دستیابی کے باعث ایل ڈی اے کے گیارہ سپورٹس کمپلیکس کی تعمیر کا منصوبہ التوا کا شکار ہے،سابق دور حکومت میں شروع ہونیوالے منصوبے میں تبدیلی اور لاگت میں دو ارب سے زائد کا اضافہ ہوا، سبزاہ زار، شاہدرہ، گلبرگ  سمیت لاہور کے گیارہ قومی اسمبلی کے حلقوں میں ستمبر 2017کو شروع ہونے والے منصوبہ نے مارچ 2018میں مکمل ہونا تھا، پی اینڈ ڈی کی جانب سے منصوبہ کی لاگت میں اضافہ کے بعد فنڈز روکے رکے ہوئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں لاہور کے بارہ قومی اسمبلی کے حلقوں میں سپورٹس کمپلیکس بنانے کا منصوبہ شروع کیا گیا،ممنصوبہ کی کل لاگت کا تخمینہ 57کروڑ 47لاکھ روپے ہے جبکہ 37کروڑ 50لاکھ روپے جاری ہو چکے ہیں۔ منصوبہ کے مطابق شاہدرہ، سبزاہ زار، چائنہ سکیم، گرومانگٹ روڈ، ایم ای سوسائٹی، مینار پاکستان سمیت دیگر علاقوں یہ سپورٹس کمپلیکس بننا تھے مگر تین سال بعد بھی یہ منصوبہ مکمل نہ ہوسکا ہے۔

پی اینڈ ڈی کی جانب سے ایک سروے کروایا گیا جس میں سول ورکس کا معیار ناقص ثابت ہونے پر مانیٹرنگ ٹیم نے ایل ڈی اے اور کنٹریکٹر دونوں کو ہدایت کی کہ سول ورکس کا معیار بہتر بنایا جائے،ایل ڈی اے نے 11 میں سے 6 سپورٹس کمپلیکس کے ڈیزائن میں منظوری لئے بغیر اضافہ کیا،جس سے 6 سپورٹس کمپلیکس کی لاگت میں سوا ارب روپے سے زائد کا اضافہ ہوا اور منصوبہ بھی تاخیر کا شکار ہوا۔ منصوبہ میں تبدیلی اور لاگت میں اضافہ کے معاملے کا جائزہ لینے کیلئے دسمبر 2019میں ٹیکنیکل کمیٹی قائم کی گئی، جس کی میٹنگ مارچ 2020میں ہو ئی۔ اب اس کمیٹی نے کام مکمل کر کے ایل ڈی اے سے منصوبہ میں تبدیلی اور لاگت میں اضافہ کے حوالے سے حقائق پر مبنی وضاحت طلب کرنے کی سفارش کر دی ہے۔

پی اینڈ ڈی کی تشکیل کردہ کمیٹی رپورٹ میں کہا گیا تھا مینار پاکستان سپورٹس کمپلیکس کی لاگت 24 کروڑ روپے اضافے سے 57 کروڑ روپے سے 81 کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ اس کمپلیکس کی تعمیر کا 73فیصد کام مکمل ہوا۔سبزہ زارسپورٹس کمپلیکس کی لاگت 20کروڑ روپے اضافے سے 57کروڑسے 77کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ کمپلیکس کی تعمیر کا 82فیصد کام مکمل ہوا۔شاہدرہ سپورٹس کمپلیکس کی لاگت 18کروڑ روپے کے اضافے کے بعد60کروڑ سے 78 کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ کمپلیکس کی تعمیر کا کام 47فیصد مکمل ہوا۔گرومانگٹ روڈ سپورٹس کمپلیکس کی لاگت 20کروڑ روپے اضافے کے بعد 71 کروڑ سے 91 کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ کمپلیکس کی تعمیر کا کام 40فیصد مکمل ہوا۔

چائنہ سکیم سپورٹس کمپلیکس کی لاگت 28 کروڑ روپے اضافے کے بعد 49 کروڑ سے 77کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ کمپلیکس کی تعمیر کا کام 70فیصد مکمل ہوا۔ اسی طرح ای ایم ای سوسائٹی سپورٹس کمپلیکس کی لاگت 18کروڑ روپے اضافے کے بعد 78 کروڑ سے 96 کروڑ روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ کمپلیکس کی تعمیر کا کام 37فیصد مکمل ہوا۔ کمیٹی کی رپورٹ کو نو ماہ گز چکے ہیں مگر فنڈز کا اجرا تاحال نہیں ہوسکا ہے یوں سپورٹس کمپلیکس کا منصوبہ التوا کا شکار ہے۔


ای پیپر