Education, local children, Gulistan, Kaka Shaheed Foundation, Balochistan
22 فروری 2021 (08:41) 2021-02-22

کوئٹہ: صوبہ بلوچستان کے علاقے گلستان میں تعلیمی ادارے کھنڈر بنتے جا رہے ہیں اور اساتذہ گھروں میں بیٹھ کر تنخواہیں وصول کر رہے ہیں۔ ایسے میں کاکا شہید فاؤنڈیشن نے اپنی مدد آپ کے تحت گلستان میں مقامی بچوں کو تعلیم دینے کا سلسلہ شروع کر دیا ہے۔

خیال رہے کہ قبائلی دشمنیوں سے تباہ حال گلستان میں غیر حکومتی تنظیم کاکا شہید فاونڈیشن کے زیر اہتمام سکول اکیڈمی کا قیام عمل میں لایا گیا اس حوالے سے ایک پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا جس کے مہمان خصوصی ڈپٹی کمشنر قلعہ عبداللہ طارق جاوید مینگل تھے تقریب میں بلوچستان بھر سے قبائلی معتبرین ، کوئٹہ چیمبر آف کامرس ، فیڈرل یونین آف جرنلسٹ کے صدر اور مختلف میڈیا ہاوسیز سے وابستہ صحافیوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کیلئے ہم ڈسٹرکٹ اور تحصیل سطح پر اقدامات کر رہے ہیں سکولوں سے غیر حاضر اساتذہ کی حاضری بھی یقینی بنائیں گے۔

تقریب سے مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کاکا شہید فاؤنڈیشن کے پلیٹ فارم سے اس وقت 100 سے زیادہ طالب علموں کو سکالرشپ مہیا کی گئی جو کوئٹہ سمیت ملک بھر کے مختلف سکولز اور کالجز میں زیر تعلیم ہے لیکن بد قسمتی سے گلستان میں اس وقت تعلیمی نظام نہ ہونے کی برابر ہے لہذا اس اکیڈمی سے علاقے کے ہزاروں بچے زیور تعلیم سے اراستہ ہو جائیں گے۔

واضح رہے کہ ماضی میں گلستان کو بدامنی ، قبائلی عداوتوں اور دیگر مسائل نے ہر حوالے سے پسماندہ رکھا ، قبائلی دشمنیوں کے باعث یہاں تعلیمی نظام سمیت ہر قسم کا انفراسٹرکچر تباہ ہوچکا ہے اس اکیڈمی کے قیام سے یہاں تعلیمی نظام میں بہتری آئے گی۔


ای پیپر