Molana Fazal Rehman Big Announcement about Government
21 نومبر 2020 (22:08) 2020-11-21

پشاور:سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا اس وقت عوامی سطح پر نااہل حکومت کیخلاف  تحریک جوبن پر ہے،حکومت کی ناکام کوششوں کے باوجود پشاور میں پی ڈی ایم کا عظیم الشان جلسہ ہونے جا رہا ہے ،نااہل حکمرانوں کی طرف سے  کوشش کی گئی یہ جلسہ نہ ہوسکے،جب انہیں کوئی وجہ نہ ملی تو پھر کہا جلسے سے کورونا کا خطرہ ہے۔

مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا 16 اکتوبرکو گوجرانوالہ سے پی ڈی ایم نے جلسوں کا آغاز کیا تھااب یہ سلسلہ رکنے والا نہیں ،پشاور جلسہ لازمی ہوگا،حکومت یہ جلسہ عالمی وبا کی آڑ میں روکنا چاہتی ہے لیکن ہم بتا نا چاہتے ہیں ہمارے نزدیک یہ حکومت سب سے بڑی وبا ہے ،اس سے جان چھوٹ جائے تو عوام خوشحال ہو جائیں گے،پشاور میں بھرپور طریقے سے جلسہ  ہوگا،حکمرانوں کے ہوش اڑیں گے،عوامی قوت سے نااہل حکومت کو بھرپور جواب دیں گے۔

پی ڈی ایم کے سر براہ مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا لوگوں کو چور کہتے ہیں اور خود چوری سے اقتدار میں آئے ہیں،پی ڈی ایم اپنے بنیادی مقاصد اور منشور کا اعلان بھی کرچکی ہے،پی ڈی ایم کا تنظیمی ڈھانچہ مکمل ہوچکا ہے،پوری یکسوئی کے ساتھ تمام جماعتیں آگے بڑھ رہی ہیں،پی ڈی ایم کا اگلا جلسہ 26 نومبر کو لاڑکانہ میں ہوگا۔

مولانا فضل الرحمن نے مزید کہا نااہل حکومت کو کسی طور بھی سکون سے بیٹھنے نہیں دیں گے،اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے 1951-52 کے بعد ملک کی تاریخ میں پہلی بار جی ڈی پی گروتھ0.4 پر پہنچ چکا ہے،ان لوگوں کی نااہلیوں کی وجہ سے ملک معاشی انحطاط کا شکار ہوا ہے،جب ملک معاشی انحطاط کا شکار ہوتا ہے تو ریاستوں کا وجود خطرے میں پڑ جاتا ہے، ادارے ریاست کے دفاع کی ذمہ داری اپنا فرض سمجھتے ہیں،دشمن کا سرحدوں پر حملہ ہی خطرے کی بات نہیں ہوتی،معاشی بحران بھی ریاست کے خاتمے کا  سبب بنتا ہے،ادارے  دعویٰ کرتے ہیں  وہ ریاست کی بقا کا فرض ادا کر رہے ہیں،ملک کو درپیش معاشی بحران  پر وہ کیسے یہ دعویٰ کرسکتے ہیں،ہم ملک کیلئے سنجیدہ ہیں، کسی نااہل کو اس ملک کا حکمران نہیں سمجھتے۔

مولانا فضل الرحمن نے کہا امریکا کا ٹرمپ تو چلا گیا  اب پاکستان کے ٹرمپ کو بھی بھیجنا ہے،بھارت کا ٹرمپ رہ گیا ہے جسے وہاں کی عوام جانیں،یہ تینوں ایک ہی کیٹیگری کے لوگ ہیں،قوم کے ہر فرد کو سنجیدگی کے ساتھ اپنی ذمہ داری ادا کرنا ہوگی۔

اس وقت مہنگائی کی وجہ سے عام آدمی، مزدور،کسان اور کاروباری طبقہ چیخ رہا ہے،ہر شعبہ زندگی سے وابستہ افراد بڑھتی مہنگائی کی وجہ سے پریشان ہیں،قوم کو اس وقت ایک پیج پر لانے کی ضرورت ہے،سول بیورو کریسی بھی ہمارے ساتھ ہیں،پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے ملک کے ہر طبقے کی  ترجمانی کریں گے،سیاسی لحاظ سے بھی نظام میں تبدیلیاں لانا ہوں گی،الیکشن میں پسند کے نتائج حاصل کرنے والوں کو روکنا ہوگا،ملکی معیشت کا پہیہ چلانے کیلئے بھرپور جدوجہد کریں گے،نااہل حکمرانوں کو ملک اور اس کے عوام کا کوئی خیال نہیں،اس وقت ملک اندرونی و بیرونی مسائل کا شکار ہے۔


ای پیپر