Rocket, mortar, attacks, Kabul, Ashraf Ghani, US forces
کیپشن:   فائل فوٹو سورس:   
21 نومبر 2020 (15:55) 2020-11-21

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں راکٹ اور مارٹر حملوں میں آٹھ شہری ہلاک اور 31 زخمی ہوگئے ہیں۔

افغان وزارت داخلہ کے مطابق شہر کے مختلف علاقوں میں کم از کم 23 راکٹ داغے گئے۔ راکٹ حملے شہر کے چار مختلف انتظامی علاقوں میں کیے گئے۔ زخمی ہونے والے افراد کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ، جہاں انہیں طبی امداد دی جارہی ہے۔ طالبان نے ان حملوں کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔

واضح رہے کہ رواں ہفتے عمران خان نے افغانستان کا دورہ کیا تھا جس کا مقصد امریکی فوج کے انخلا کے بعد وہاں قیام امن کا جائزہ لینا تھا۔ پاکستان نے افغانستان میں قیام امن کے لیے بڑی کوششیں کیں ہیں۔ عمران خان کا کہنا ہے کہ خطے کا امن افغانستان کے امن سے جوڑا ہے۔

خیال رہے کہ افغان امن معاہدے سے پہلے امریکا اور افغانستان کی اعلیٰ قیادت نے پاکستان کی عسکری او سیاسی قیادت سے ملاقات کی تھی اور عمران خان اور جنرل قمر جاوید باجوہ پر زور دیا تھا کہ وہ کابل میں امن قائم کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

کہا جاتا ہے کہ پاکستان کی مداخلت کے بعد افغان عسکریت پسندوں نے امریکا اور افغان انتظامیہ سے معاہدہ کیا تھا۔ عمران خان نے اس معاہدے کا خیر مقدم کیا کیونکہ ہمسایہ ملک میں امن قائم ہونے سے پاکستان کو بہت فائدہ ہو گا۔

دوسری جانب مودی نے افغان امن معاہدے کی مخالفت تو نہیں کی لیکن وہ اس کے حق میں بھی نہیں تھا۔ اس کی بڑی مثال یہ ہے کہ مودی سرکار نے امن معاہدے کو ناکام بنانے کے لیے داعش کے ذریعے مختلف مقامات پر حملے کروائے جس سے کافی مالی اور جانی نقصان ہوا۔ اس کے علاوہ بھارت افغان سر زمین کو پاکستان کے خلاف بھی استعمال کرتا ہے جس کے ثبوت پاکستان نے عالمی برادری کو فراہم کر دیئے ہیں۔


ای پیپر