Gilgit Baltistan elections, Jamiat ulema-e-Islam, Rehmat Khaliq, victory, Chief Election Commissioner
کیپشن:   Photo by Facebook
21 نومبر 2020 (10:43) 2020-11-21

سکردو: گلگت بلتستان کے ضلع دیامر کے حلقہ جی بی ایل اے 17 دیامر تھری کا سرکاری نتیجہ جاری کر دیا گیا ہے۔ جس کے مطابق جمیعت علمائے اسلام کے رحمت خالق نے میدان مار لیا ہے۔

حتمی نتیجے کے مطابق جمیعت علمائے اسلام کے رحمت خالق 5 ہزار 498 ووٹوں کے ساتھ فاتح قرار پائے ہیں ، جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے حیدر خان 5 ہزار 450 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی نے گلگت بلتستان میں حکومت بنانے کا دعوی کیا ہے۔ حکومت بنانے کے لیے پی ٹی آئی کو آزاد امیدواروں کا سہارا لینا پڑا۔ انتخابات میں کامیابی کے بعد پی ٹی آئی کے وزرا نے اپوزیشن کو آڑے ہاتھوں لیا۔ اسد عمر اور شبلی فراز کے بقول گلگت بلتستان انتخابات میں کوئی دھاندلی نہیں ہوئی لیکن سیاسی جماعتوں نے شرمناک شکست کے بعد دھاندلی کا شور مچایا۔

ادھر وزیر ریلوے شیخ رشید نے گلگت بلتستان کے انتخابات کو تاریخ کا شفاف ترین الیکشن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں اب کشمیر میں ہونے والے انتخابات کی فکر کریں۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کشمیر میں بھی بھاری اکثریت سے جیتے گی۔

خیال رہے کہ چیف الیکشن کمیشن نے بھی گلگت بلتستان کے انتخابات کو شفاف ترین الیکشن قرار دیتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کے الزامات کو مسترد کر دیا تھا۔

دوسری جانب پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے گلگت بلتستان انتخابات کو دھاندلی زدہ قرار دیدیا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ اس انتخابات میں منظم دھاندلی ہوئی ہے اور بڑی تعداد میں اُن کے ووٹوں کو چوری کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ دونوں پارٹیوں نے نتائج کو یکسر مسترد کر دیا ہے۔ جبکہ بلاول بھٹو نے تو دھاندلی کے خلاف سڑکوں پر نکلنے کا اعلان بھی کیا تھا۔


ای پیپر