محنت کو اپنا استاد بنانے سے منفرد مقام حاصل ہوتا ہے:فلمسٹار صنم چوہدری
21 مارچ 2018 (21:03)

ثاقب اسلم دہلوی:اگر آج پاکستان فلم انڈسٹری کے کامیاب ستارے کا ذکر کیا جائے تو سب سے پہلا دانش تیمور کانام چمکتا نظر آئے گا ،جن کا شمار ٹیلی اور سینما فلم اسٹارز میں ہوتا ہے اور یہ اعزاز ان کے علاوہ شاید ہی کسی کے پاس ہو، انہوں نے اپنے جوہرِ قابل کے بل پر اتنی کامیابیاں حاصل کیں کہ کوئی دوسرا انکا ریکارڈ نہیں توڑ پایا۔ماڈلنگ سے اپنے کامیاب کیرئیر کا آغاز کرنے والے دانش تیمور کو آج فلموں کی اشدضرورت سمجھا جاتا ہے کیونکہ یہ جس فلم کی زینت بنتے ہیں وہ ریلیز ہونے کے بعد اپنی مکمل آب و تاب سے سینما کے اُفق پر چمکنے لگتی ہے ،اس کے ساتھ ہی ان کے ڈراموں اور ٹیلی فلموں کو بھی خاصی شہرت حاصل ہے ۔یہ ایک اچھے فنکار ہی نہیں بلکہ بہترین انسان بھی ہیں ۔گزشتہ دنوں ان سے خصوصی ملاقات کا اہتمام کیا گیا ،اس موقع پر معروف اداکارہ صنم چوہدری بھی موجود تھیں جنہیں نیگیٹیو کریکٹر کے حوالے سے خاصی شہرت حاصل ہے اور نجی چینل ے بہترین فی میل سوپ ایکٹریس ایوارڈ بھی جیت چکی ہیں۔دانش تیمور کے ساتھ ساتھ ان سے بھی گفتگو ہوتی رہی۔جس کا حال قارئین کی زیر نظر ہے ۔
نئی بات:کیا ہمارے ڈراموں کو پروڈکشن ہاﺅس والے پہلے سے زیادہ وقت دے رہے ہیں؟
صنم چوہدری :دیکھیں شروعات سے لیکر آج تک سب اپنے کام سے مخلص ہوکر کام کرنے میں لگے ہیں جبھی تو ہمارا ڈرامہ پاکستان سے باہر پسند کیا گیا اور دن بہ دن ہمارے ڈراموں کے معیار میں وقت کے ساتھ ساتھ بہت سی تبدیلیاں آرہی ہیں اور لوگ کل سے زیادہ آج اپنے کام پر مکمل توجہ دے رہے ہیں کیونکہ اب ہمارے ڈراموں کا دائرہ بہت وسیع ہوا ہے ۔پاکستان سے باہر ناظرین کی ڈیمانڈ پر پورا اترنا بھی ضروری ہے ، جس کا خیال ہر شخص رکھ رہا ہے اور اس میں کوئی شک نہیں ہمارے پروڈکشن ہاﺅس سے لیکر ہدایتکار اور ہر فرد اپنے کام سے مخلص ہوکر کام کررہا ہے ۔
نئی بات:کیا سفارش پر آنے والے لوگ جلد کامیاب ہوجاتے ہیں؟
صنم چوہدری :سفارش کسی ٹیلنٹ کا نام نہیں ہوتا اور کام کرنے کیلئے ٹیلنٹ کی ضرورت ہوتی ہے اور آگے وہی لوگ بڑھتے ہیں جن میں کچھ کر دکھانے کی فنی صلاحیتیں موجود ہوں ۔
نئی بات:فیشن انڈسٹری کے متعلق کیا کہیں گی؟
صنم چوہدری :جس طرح ہمارا ڈرامہ،فلم ترقی کررہا ہے اسی طرح دن بہ دن فیشن انڈسٹری بھی کامیابی کی جانب گامزن ہے ۔
نئی بات:کیا ہمارے ملک میں نیو ٹیلنٹ کی بھرمار ہے ؟
صنم چوہدری :ہاں جی، پاکستان میں جتنا ٹیلنٹ موجود ہے اسکی مثال نہیں ملتی جیسے جیسے نئے چہروں کو مواقع دیے جارہے ہیں ۔آپ خود دیکھیں وہ اپنی منفرد شناخت بھی حاصل کررہے ہیں ۔
نئی بات:آپ کے ساتھ ساتھی فنکاروں کا رویہ کیسا رہا؟
صنم چوہدری :اللہ کا شکر ہے سب سے پیار ملا سیکھنے کو ملا اپنے سینئرز کا احترام کرتی ہوں اور ان سے کچھ نہ کچھ سیکھنے کی جستجو میں لگی رہتی ہوں تاکہ میرے کام میں مزید خوبصورتی پیدا ہو،ویسے اچھے برے لوگ تو ہر جگہ موجود ہوتے ہیں آپ کا اچھا ہونا بہت ضروری ہوتا ہے
نئی بات:ڈرامہ ”آج کل روبروتھا عشق“ کے بہت چرچے ہیں اس میں اپنے کردار کے حوالے سے بتائیے؟
صنم چوہدری :اس میں میرا کردار بہت اچھا ہے ۔ دانش تیمور کے ساتھ کام کرکے بھی بہت مزہ آیا۔ فرقان خان ایک بہترین ہدایتکار ہیں،جو اپنے کام کو بہترین طریقے سے کررہے ہیں اور یہ پراجیکٹ آن ائیر ہونے کے بعد اپنی کامیابیوں کے نئے ریکارڈ قائم کرے گا۔
نئی بات:ان دنوں کونسے پروجیکٹ آن ائیر ہیں؟
صنم چوہدری :گھر تتلی کا پر ، بے درد سیاں وو دیگر ڈرامے آن ائیر ہیں۔
نئی بات:آپکی فلم جیک پوٹ کب آرہی ہے ؟
صنم چوہدری :فلم جیک پوٹ مزاح سے بھر پور فلم ہے اس میں ہر وہ رنگ شامل ہے جو ایک فلم پر رنگے ہونے چاہئے اس کو بہت ہی خوبصورتی سے شعیب خان نے ہدایت دی ہے اسکے پروڈیوسر خرم شیراز ہیں مجھ سمیت تمام لوگوں کو اس فلم سے بہت سی امیدیں وابسطہ ہیں اور جب یہ ریلیز کی جائیگی تو پہلے میڈیا پر اناﺅنسمنٹ ہوگی۔
نئی بات:ہر آفر قبول کرلیتی ہیں؟
صنم چوہدری :جی نہیں۔مَیں اسکرپٹ پڑھ کر مطمئن ہونے کے بعد ہی حامی بھرتی ہوں یہی وجہ ہے میرے کرداروں کو شائقین ڈرامہ میں پسند کیا جاتا ہے ۔
نئی بات:شوبز کی فیلڈ میں کس سے سپورٹ ملی؟
صنم چوہدری :میری بہن نے مجھے بہت سپورٹ کیا کیونکہ میری بہن زیب چوہدری خود بھی بہترین اداکارہ ہیں۔
نئی بات:اب تک کتنے ڈراموں میں کام کرچکی ہیں؟
صنم چوہدری :بے شمار ڈراموں میں کر چکی ہوں لیکن تعداد نہیں بتاسکتی۔
نئی بات:کس طرح کردار میں خوبصورتی پیدا ہوتی ہے ؟
صنم چوہدری :کردار کو اگر سمجھ کر اس کے احساسات خود پر طاری کرلئے جائیں تو کام میں نکھار و خوبصورتی خود بخود پیدا ہوجاتی ہے وہ لوگ کبھی آگے نہیں بڑھ پاتے جو اپنے کام و شخصیت کو سب کچھ سمجھنے لگ جاتے ہیں۔
نئی بات:ڈرامہ انڈسٹری کے حوالے سے آپ کیا کہیں گی؟
صنم چوہدری :ہماری ڈرامہ انڈسٹری پی ٹی وی کے ابتدائی دور ہی سے کامیابی کی منزلیں طے کر رہی ہے ۔ ڈرامہ انڈسٹری کو پروان چڑھانے کیلئے شروع ہی دن سے سخت محنتیں کی گئی ہیں جس کا یہ صلہ ہمیں مل رہا ہے کہ آج پاکستانی ڈراموں کو دنیا کے بیشتر مماللک میں دیکھا اور پسند کیا جارہا ہے جس کی بدولت ہمارے ناظرین کا دائرہ کار بھی وسیع ہوا ہے ۔
(دانش تیمور سے گفتگو کرتے ہوئے)
نئی بات:شوبز انڈسٹری کیسی لگی؟
دانش تیمور:بہت اچھی اور یہ میرا دوسرا گھر ہے ۔
نئی بات:کیا آپ کے گھر والے آپکے کام کے خلاف تھے؟
دانش تیمور: میرے کیرئیر کے حوالے سےمیری والدہ تھوڑی فکر مند تھی مگر گھر والوں کی سپورٹ ہی تھی، جس نے میرے حوصلوں کو بلند و مضبوط کیا ۔
نئی بات:ماڈلنگ کرتے وقت آپ نے سوچا تھا کہ آپ انڈسٹری کی ضرورت بن جائیں گے؟
دانش تیمور:مجھے اس فیلڈ میں آنے سے پہلے ہی بہت سی آفرز ہوتی رہتی تھیں،مجھے محنت پر یقین ہمیشہ سے ہی رہا ہے اور مَیں سمجھتا ہوں کہ میں بہت خوش نصیب ہوں کے مجھے میرے ہر مقاصد میں کامیابیاں ملی۔
نئی بات:کب پیدا ہوئے،کہاں تک تعلیم مکمل کی؟
دانش تیمور:16 فروری کو کراچی میں پیدا ہوا،MBA تک تعلیم مکمل کی،2005 ءمیں اپنے کامیاب شوبز کیرئیر کا آغاز کیا۔
نئی بات:ان دنوں آپ کی کیا مصروفیات ہے ؟
دانش تیمور:میں ان دنوں ٹی این آئی پروڈکشن کے زیراہتمام بننے والے ڈرامہ سیریل” رو برو تھا عشق“ جس کے ہدایتکار فرقان خان ہیں اور ایک ڈرامہ فرقان آدم کی ہدایتکاری میں کررہا ہوں،جس کے پروڈیوسر حسن ضیا اور میں خود ہوں یہ دونوں منفرد موضوعات پر مبنی ڈرامے ہیں بہت سی آفرز تھیں مگر اُن کو چھوڑ کر صرف ان دونوں پر کام کرنے کو ترجیح دے رہا ہوں کیونکہ میں اپنے چاہنے والوں کو مایوس نہیں کرنا چاہتا یہی وجہ ہے کہ میں نے اپنے ساتھ کبھی ڈراموں کی تعداد کو بڑھانے کا نہیں سوچا اچھے سے اچھے کردار کی تلاش میں مصروف رہتا ہوں،کیونکہ میرے چاہنے والوں کی مجھ سے امیدیں وابستہ ہوتی ہیں۔
نئی بات:لگتا ہے پروڈیوسر بننے کے بعد اب آپ پروڈکشن ہاﺅس والے بھی ہوجائیں گے؟
دانش تیمور:جی میری پلاننگ میں پروڈکشن ہاﺅس بھی شامل ہے جس پر بہت جلد کام شروع کروںگا جس سے پاکستان کو بہت سے نامور چہرے بھی ملیں گے اور انشااللہ اپنے پروڈکشن ہاﺅس کے تحت میں کوشش کرونگا کہ نت نئے موضوعات کو اسکرین کی زینت بناﺅں اور ہوسکتا ہے کہ بہت جلد اپنی فلم بنانے پر بھی کام شروع کردوں۔
نئی بات:پروڈکشن ہاﺅس کا نام کیا ہوگا؟
دانش تیمور:جی فائنل ہونے تک مکمل تفصیل ضرور بتاﺅںگا ۔
نئی بات:آئندہ فلموں کے حوالے سے کیا خیال ہے ؟
دانش تیمور:ابھی تو فی الحال شیخ صاحب کی ہدایتکاری میں”وجود“کی ریکارڈنگ چل رہی ہے ، جس طرح انہوں نے فلم پر بے لوث محنت کی ہے ۔اُس کو میں الفاظ میں پرُو بھی نہیں سکتا ۔
نئی بات:اس فلم میں ایسا کیا ہے جو لوگوں کی توجہ حاصل کرنے میں کامیاب ہوگی؟
دانش تیمور:اس میں وہ سب کچھ شامل ہے جو شائقین فلم کی مکمل ڈیمانڈ ہوتی ہے اور جاوید شیخ ایک معتبر اور لیجنڈ نام ہے جن کے ساتھ ان کی زندگی کا سنہرا تجربہ ہے ،لوگ جانتے ہیں کہ شیخ صاحب کاہرکام منفرد و معیاری ہوتا ہے اور میری خوش نصیبی ہے کہ میں ان جیسے عظیم انسان کی ہدایتکاری میں کام کررہا ہوں۔
نئی بات:کیا آپ کو اندازہ تھا کہ آپ فلموں کہ کامیاب سٹار بن جائیں گے؟
دانش تیمور:دراصل بات یہ ہے کہ میں نے اپنے کیرئیر میں لاتعداد کامیاب ٹیلی فلمز ہی کی ہیں شاید مجھے شائقین نے ایک فلم ایکٹر پہلے ہی رجسٹر کرلیا تھا اور میں تو صرف اپنے کام پر خوب محنت کرتا ہوں برکتیں تو اللہ کی جانب سے شامل ہوجاتی ہیں ،جسے سب کامیابیاں کہتے ہیںاور میں اسکرپٹ کو بہت سنجیدگی سے لیتا ہوں۔ہر اسکرپٹ پر کام نہیں کرتا جب تک میں مطمئن نہ ہوجاﺅں تو حامی نہیں بھرتا۔
نئی بات:کیا سیکھتے رہنے سے انسان مکمل بن جاتا ہے ؟
دانش تیمور:ہر آنے والا لمحہ کچھ نہ کچھ سکھاتا ہے اور سیکھتے رہنے والا شخص کبھی ناکام نہیں ہوتا اورویسے بھی سیکھنے کی کوئی حد نہیں ہوتی اور نہ ہی کوئی سیکھ سیکھ کے مکمل بن سکتا ہے مگر انسان میں نکھار ضرور پیدا ہوجاتا ہے ،اسلئے ماں کی گود سے قبر کی آغوش تک سیکھنے کا عمل جاری رہتا ہے ۔
نئی بات:ہمیں اپنے سینماﺅں کیلئے کیسی فلمیں بنانی ہونگی؟اور کن کے تجربات سے فائدہ اٹھانا ہوگا؟
دانش تیمور:ہمیں اپنے پاکستانی سینما گھروں کیلئے معیاری فلمیں بنانی ہونگی۔ نت نئے موضوعات پر کام کرنا ہوگا اور خیال رکھنا ہوگا کہ فلم ٹیلی فلم نہ بن جائے کیونکہ ٹیلی فلمیں تو ٹی وی اسکرین کی زینت بن کر ہی اچھی لگتی ہیں، ہم نے پاکستانی فلموں کا سنہرا دور دیکھا اور زوال بھی مگر ہم نے ہمت نہیں ہارنی ہے کیونکہ ہمت وہ ہارتے ہیں جن میں محنت کرنے کی صلاحیتیں موجود نہ ،میری اب تک جتنی بھی فلمیں ہیں وہ سب کامیابی سے ہمکنار ہوئیں ہیں جس کی وجہ اچھا موضوع اور شائقین فلم کی ڈیمانڈ پر پورا اترنا تھا اور ایسے ہی موضوعات کو فلموں کی شان بنانا ضروری ہے جسے دیکھنے کیلئے شائقین آج بھی بیقرار نظر آتے ہیں ،آج بھی وہ لیجنڈز فنکار موجود ہیں جنہوں نے اپنی زندگی فن کیلئے وقف کردی ہمیں ان کو اپنے ساتھ ملا کر ہم چل رہے ہیں کیونکہ ان کے تجربات بھی ہماری انڈسٹری کو اپنے پیروں پر کھڑا کرنے کیلئے بہت ضروری ہیں۔
نئی بات:اپنی کامیاب فلموں کے بارے میں کیا کہیں گے؟
دانش تیمور:اللہ کا شکر ہے کہ جتنی بھی فلمیں کیں اب تک سب کا کامیاب رسپانس آپکے سامنے ہے میں ہمیشہ اچھے اسکرپٹ پر کام کرتے رہنا چاہتا ہوں ”جلیبی“ سے لیکر ”مہرالنسا وی لب یو“ بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی تھی جس کا رزلٹ آپ سب کے سامنے ہے جس نے پاکستان اور اس باہر بھی اپنی کامیابیوں کے جھنڈے گاڑے۔
نئی بات:لوگ کہتے ہیں کیبل کی وجہ سے لوگوں نے سینما گھروں سے منہ موڑلئے؟
دانش تیمور:یہ کہنا درست نہیں کیبل کی وجہ سے لوگوں نے سینما ہالوں سے منہ موڑا یہ تو صرف خود کو دھوکے میں رکھنے والی بات تھی ، اگر فیملیز نے سینما ہالوں سے کیبل کی وجہ سے منہ موڑا ہے تو ہمارے سینما ہالوں میں پڑوسی ملکوں کی فلمیں کیسے بزنس کرلیتی ہیں اور حال ہی میں عید پر ریلیز ہونے والی فلموں کو شائقین نے خوب پزیرائیوں سے نوازا ہے جس میں میری فلم” مہرالنسا وی لب یو“بھی شامل ہے ،تو آپ خود بتائیں کہ یہ کہنا کیسے درست ہوگا ؟
نئی بات:اب جو فلمیں کامیابی کی جانب گامزن ہیں اُس کی وجہ؟
دانش تیمور:آج کی فلمیں بہت جدید طرز پر بنائی جارہی ہیں اور دیکھئے گا ایک وقت آئیگا کہ ہماری فلمیں بھی اپنا کامیاب بزنس پاکستان کے ساتھ ساتھ باہر کے ملکوں میں کرے گی جو ہوا اُس پر پچھتانے سے بہتر ہے کہ اپنے آنے والے کام کو خوبصورت طریقے سے پیش کریں۔
نئی بات:کیا ہمیں کسی سے مقابلے کی ضرورت ہے ؟
دانش تیمور:دیکھیں ہمیں کسی سے مقابلہ نہیں کرنا اپنے کام میں بہتری سے مزید بہتری متعارف کرواتے رہنا ہے تاکہ ہمارا ڈرامہ اس سے زیادہ مزید کامیابیاں سمیٹ سکے ۔
نئی بات:فلم و ڈرامہ انڈسٹری کی کامیابی کا کریڈٹ کس کو دیں گے؟
دانش تیمور:اس کی کامیابی کا سہرا تو ہر اس فرد کے سر سجتا ہے جو سیٹ پر موجود ہوتے ہوئے اپنے کام کو ایمانداری سے انجام دیتا ہے چاہے اس کا عہدہ اُس دورانِ ریکارڈنگ کچھ بھی ہو۔
نئی بات:کیا نیو ٹیلنٹ اچھا کام کررہا ہے ؟
دانش تیمور:نئے آنے والے لڑکے لڑکیاں بھی بہت اچھا کام کررہے ہیں جبھی تو انکے کام کو خوب پزیرائیاں حاصل ہورہی ہیں اور کچھ ایسے بھی ہیں جنہیں دیکھ کرادھورا پن سا محسوس ہوتا ہے مگر یہ لوگ محنت کو اپنا استاد بنالیں تو اپنا منفرد مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوسکتے ہیں ۔
نئی بات:ہمارے ہاں کون سے پروڈکشن ہاﺅس بہترین کام کررہے ہیں؟
صنم چوہدری : سب ہی پروڈکشن ہاﺅس بہت اچھا کام کررہے ہیں۔زیادہ پروڈکشن ہاﺅس کے ساتھ چینلز کی تعداد نے بھی ڈرامہ انڈسٹری کی کامیابیوں کو مزید سپورٹ کی ۔
نئی بات:کیا آج کے دور میں آسانی سے کام مل جاتا ہے ؟
دانش تیمور:ایسا ہی سمجھ لیں کہ آج کے دور میں نئے لوگوں کو باآسانی کام مل جاتا ہے جس کی وجہ سے انکو سخت محنت کی ضرورت نہیں پڑتی، اب وقت نے اپنی کروٹ بدلی ہے نیو ٹیلنٹ کو پلیٹ فارم مل رہے ہیں، زمانے کے ساتھ چلنے والے پیچھے نہیں ہوتے اور زمانے کو نظر انداز کردینے والے پیچھے رہ جاتے ہیں ۔
نئی بات:میوزک سے کتنا لگاﺅ ہے ؟
دانش تیمور:موسیقی سے اتنا لگاﺅ ہے جتنا ایک انسان اور فنکار کو ہونا چاہئے۔
نئی بات :فلم کے حوالے سے کوئی یادگار واقعہ؟
دانش تیمور:ایک واقعہ جو فلم جلیبی سے منسلک ہے وہ یہ ہے کہ مجھ سے نجی پروڈکشن ہاﺅس نے ایک ڈرامہ سیریل کیلئے تقریباً ایک ماہ کا وقت مانگا اسکرپٹ اچھا ہونے کی وجہ سے میں نے انکو اپنی تاریخیں دے دیں اور ملنے والی دوسری آفرز سے وقت نہ ہونے کہ باعث معذرت کرتارہا اور جب تاریخیں آگئیں تو اُن لوگوں نے مجھ سے معذرت کرلی اور کہا کہ ہمارا اسکرپٹ اب تک مکمل نہیں ہوسکا ہے اور کچھ مسئلے مسائل بھی پیدا ہوگئے ہیں جس پر میں نے اُن سے بولا کہ میں نے آپ کی وجہ سے دوسرے لوگوں سے معذرت کرلی اور اب آپ !خیر میں نے اللہ کانام لیکر صبر کیا اور سیر و تفریح کیلئے بیرون ملک جانے کی پلاننگ کرہی رہا تھا کہ فلم جلیبی والوں کا فون آیا اور ان کو وہیں تاریخیں درکار تھیںجو میری پروڈکشن ہاﺅس والے ضائع کرچکے تھے ،رات کو بات ہوئی انہوں نے اسکرپٹ مجھے ای میل کیا اور میں اسکرپٹ سے اتناناثر ہوا کہ اگلے دن میں شوٹ پر موجود تھا ۔
نئی بات:یہ تو اللہ کی طرف سے آپ پر بہت کرم ہوا؟کیسا لگا یہ سب کچھ ؟
دانش تیمور:دیکھیں میرا ایمان ہے کہ اگر آپ کسی بھی کام کو سچی نیت کے ساتھ انجام دیں گے تو اللہ پاک وسیلے بنادیتا ہے اور میں لگن محنت و جستجو کے ساتھ اپنے ہر کام کو کرنا پسند کرتا ہوں۔
نئی بات:اپنے چاہنے والوں کیلئے کوئی پیغام؟
دانش تیمور:میں سب کا بہت شکر گزار ہوں جو مجھ نا چیز سے اتنا پیار کرتے ہیں ،آپ سب کا پیار ہی میرا سب سے بڑا ایوارڈ ہے کیونکہ میں آپ سب کے بنا ادھورا ہوں،خوش رہیں آپس میں پیار۔محبت بانٹتے رہیں خوشیاں پھیلانے سے خوشیاں پھیلیں گی ،اپنے ملک کی تعمیرو ترقی کیلئے اپنے حصے کا کردار اداکریں ہمیں اپنا ملک مزید آگے لیکر جانا ہے پاکستان ہماری شان ہے اور پہچان بھی۔


ای پیپر