پاکستانی ایک سال میں 143 ارب کے سگریٹ پھونک جاتے ہیں

21 مارچ 2018 (18:24)

اسلام آباد:پاکستان میں سالانہ 143.208 ارب روپے سگریٹ کے دھوئیں میں اڑا دیئے جاتے ہیں ۔


تفصیلات کے مطابق ’’ورلڈ کانفرنس آن ٹوبیکو‘‘ میں پیش کی گئی رپورٹ میں اس امر کا انکشاف ہوا کہ پاکستانی عوام سالانہ 143.208ارب روپے سگریٹ کے دھوئیں میں اڑا دیتے ہیں ۔پاکستان میں تمباکونوشی کے باعث پیدا ہونے والی مختلف بیماریوں سے سالانہ ایک لاکھ 60 ہزار 100 افراد کی موت واقع ہوتی ہے جبکہ ملک میں 10تا 14سال کے ایک لاکھ 25 نوجوان اور 15سال یا اس سے زائد عمر کے ایک کروڑ 47 لاکھ 37 ہزار بالغ افراد سگریٹ نوشی کرتے ہیں ۔


رپورٹ کے مطابق پاکستان میں سگریٹ نوشی پر قابو پانے کیلئے حکومتی سطح پر خاطر خواہ اقدامات کئے جا رہے ہیں اور حکومت کی جانب سے سگریٹ کی خوردہ قیمت کے 60 فیصد کے مساوی ٹیکسز نافذ کئے گئے ہیں ،تاہم عالمی ادارہ صحت کی جانب سے دنیا بھر میں سگریٹ نوشی کے تدارک کیلئے 70 فیصد کے ٹیکسز کے نفاذ کی تجویز پیش کی جاتی ہے۔ رپورٹ کے مطابق سگریٹ نوشی سے پیدا ہونے والے امراض کی وجہ سے اموات کی شرح میں اضافہ کا خدشہ ہے۔

مزیدخبریں