PSC,papers,leaked,scandal,officials,anti,corruption
21 جنوری 2021 (14:37) 2021-01-21

لاہور ( سہیل عباس بلوچ ) پبلک سروس کمیشن پرچے لیک سکینڈل میں سرکاری افسران اینٹی کرپشن کے ریڈار پرآگئے۔ ذرائع کے مطابق اینٹی کرپشن نے پبلک سروس کمیشن پرچہ لیک سکینڈل میں اسسٹنٹ کمشنر جنرل لاہور مشتاق حسین کو بھی شامل کر لیا ہے۔ اسسٹنٹ کمشنر جنرل مشتاق حسین اینٹی کرپشن کی طلبی پر بیرون ملک فرار ہو گیا۔

تفصیلات کے مطابق اے سی جی اینٹی کرپشن کی تحقیقات سے بچنے کیلئے بیرون ملک چلا گیا ہے۔ انٹی کرپشن نے پبلک سروس کمیشن پرچے لیک سکینڈل میں اسسٹنٹ کمشنر جنرل مشتاق کو 16 جنوری کو مطلوبہ ریکارڈ کے ہمراہ ذاتی حیثیت میں بیان قلمبند کرانے کیلئے سمن جاری کر رکھے تھے۔ کمشنر لاہور ذوالفقار گھمن نے اسسٹنٹ کمشنر جنرل لاہور کو چار ماہ کی رخصتی کی درخواست ریکمنڈ کرتے ہوئے چھٹی کی سفارش ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب کو بھجوا دی ہے۔ پیپر لیک سکینڈل میں مرکزی ملزم عثمان کی آج ضمانت مسترد کرانے کیلئے اینٹی کرپشن نے اہم ریکارڈ مرتب کر لیا۔

سکینڈل میں اینٹی کرپشن کو مزید بیورو کریسی سے تفتیش درکار ہے۔ اینٹی کرپشن اب تک 8 ملزمان کو گرفتار کر چکا جبکہ تحقیقات کا دائرہ کار وسیع کر دیا۔ اینٹی کرپشن نے مطلوبہ ریکارڈ کو انٹیلی جنس بنیادوں پر اکٹھا کرنا شروع کر دیا ہے۔ اینٹی کرپشن تحقیقات میں پبلک سروس کمیشن پرچے کمیشن لیک سکینڈل میں لاکھوں روپے کمائے جانے کے انکشافات ہوئے ہیں۔ پبلک سروس کمیشن کے پیپر لیک کیلئے حساس طریقے سے لاکھوں روپے وصول کئے جاتے رہے ہیں۔ جن کا سراغ لگانے کیلئے اینٹی کرپشن جے آئی ٹی نے سر جوڑ لئے ہیں۔ پبلک سروس کمیشن پرچے لیک سکینڈل کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے مزید گرفتاریاں متوقع ہیں۔ گرفتار ملزمان سے متوقع شواہد اینٹی کرپشن کو نہیں مل سکے جبکہ مرکزی ملزم کی ضمانت مسترد کرانے کیلئے اینٹی کرپشن نے قانونی چارہ جوئی تیز کر دی ہے۔ 


ای پیپر