سپریم کورٹ نے پٹواریوں سے زمین کے انتقال کا اختیار واپس لے لیا
21 جنوری 2019 (21:11) 2019-01-21

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے پٹواریوں کے زمین انتقال سے متعلق تفصیلی فیصلہ جاری کردیا، پٹوار خانے صرف ریکارڈ رکھنے تک محدود کردیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق تفصیلی فیصلہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنچ نے تحریر کیا ہے ، 23 صفحات پر مشتمل فیصلے میں کہا گیا ہے کہ زمین کی منتقلی اب صرف رجسٹریشن کے ذریعے ہوگی۔فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پٹواری،قانون گواورتحصیلدارصرف دیہی آبادیوں میں کام کرسکتے ہیں،جہاں لینڈریونیوایکٹ نافذہیوہاں پٹواری تقسیم وانتقال نہیں کرسکتے۔

سابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے فیصلے میں لکھا ہے کہ کیپی میں اس حکم نامے پرپہلے سے عمل درآمد جاری ہے، اب اس حکم کااطلاق پنجاب کے علاوہ سندھ، بلوچستان وفاقی دارالحکومت پربھی ہوگا،صوبیوفاقی دارالحکومت ایک ماہ میں عملدرآمدرپورٹ جمع کرائیں۔یہ فیصلہ پٹوارخانوں کے حوالے سے مختلف شکایات پر ازخود نوٹس لیاگیا۔

ریوینوبورڈکے سینئرممبرنے بتایا کہ لاہور میں363اسٹیٹس، موضعات ہیں، ریوینوبورڈممبرکے مطابق 246 اسٹیٹس کا ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کردیا گیا۔ کے پی حکومت نے بتایاوہاں لینڈریونیوایکٹ1974 سے نافذ ہے۔ سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ شہری علاقوں میں زمین کی کوئی خرید وفروخت زبانی نہیں ہوگی، پٹوار خانے اور ریونیو ریکارڈ کے دوسرے دفاتر صرف ریکارڈ کی حفاظت کے ذمہ دار ہوں گے جو زمین کی ٹرانسفر نہیں کرسکیں گے۔


ای پیپر