بھارت کے کسی بھی ایڈونچر کا بھرپور طاقت سے جواب دیا جائے :وزیر اعظم
کیپشن:   Image Source : IK Facebook
21 فروری 2019 (18:16) 2019-02-21

اسلام آباد :پلوامہ حملے کے بعد وزیر اعظم نے بھارتی دھمکیوں کا جواب دیتے ہوئے پاک فوج کو بھارت کے کسی بھی ایڈونچر کا بھرپور جواب دینے کا اختیار دیدیا ،عمران خان نے کہا اگر بھارت کسی بھی قسم کی جارحیت کرے تو پوری طاقت سے جواب دیا جائے ۔

قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں پلوامہ حملے کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا ،اجلاس میں کہا گیا کہ پاکستان پلوامہ حملے میں ملوث نہیں ،سارا پلان بھارت کے اندر مقامی سطح پر تیار ہوا اور کروایا گیا ،عمران خان نے بھارتی دھمکیوںکا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر بھارت کسی بھی قسم کی جارحیت کرے تو اس کا بھرپور طاقت سے جواب دیا جائے ۔

اجلاس میں کہا گیا کہ پاکستان کی ریاست کو انتہا پسندوں ،دہشتگردوں کے ہاتھوں یر غمال نہیں بننے دینگے ،قومی سلامتی کمیٹی کے اس اہم اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اگر پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے میں کوئی ملوث پایا گیا تو سخت ترین ایکشن لینگے ۔

قومی سلامتی کے اجلاس میں دوٹو ک اعلان کرتے ہوئے کہا گیا کہ پلوامہ حملہ بھارت کے اندر سے کرا یا گیا ،پلوامہ حملے سے متعلق اہم انکشاف کرتے ہوئے کہا گیا کہ اس حملے کی پلاننگ بھارت کے اندر مقامی سطح پر کی گئی ،پاکستان نے مخلصانہ طور پر بھارت کو واقعہ کی تحقیقات میں مدد کی پیشکش کی ہے ،قومی سلامتی کمیٹی کے اس اہم اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اگر پاکستان کی سرزمین استعمال کرنے میں کوئی ملوث پایا گیا تو سخت ترین ایکشن لینگے ۔

قومی سلامتی کمیٹی کے اس اہم اجلاس میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی تشدد کی بھرپور مذمت کی گئی ، بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں جاری پر تشدد کاروائیوں کو ختم کرنا چاہیے ، بھارت کو سوچنا چاہیے کہ مقبوضہ کشمیر میں تشدد کی کاروائیوں سے یہ ردعمل آر ہا ہے ، پلوامہ حملے کی بات کرتے ہوئے کہا گیا کہ پاکستان کسی بھی طور پر پہلوامہ حملے میں ملوث نہیں ،پاکستان اس سے قبل بھی بھارت کو دہشتگردی سمیت دیگر متنازعہ امور پر مذاکرات کی پیشکش کر چکا ہے ،کمیٹی میں کہا گیا کہ امید ہے بھارت پاکستان کیجانب سے تحقیقات کے حوالے سے آفر کا مثبت جو اب دیگا ۔


ای پیپر