Bilawal Bhutto,rejecting,Dialogue,National,pm imran khan,PDM movment
21 دسمبر 2020 (16:56) 2020-12-21

لاہور:پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم عمران خان کی طرف سے نیشنل ڈائیلاگ کی آفر کو مستردکرتے ہوئے کہا کہ اس کا وقت گزر چکا ہے ،پی ڈی ایم کے حکومت کے ساتھ کوئی مذاکرات نہیں چل رہے۔

پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول زرداری نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت بنیادی حقیقت سے واقف نہیں ہے اور عوام کا درد اور ناراضگی کو محسوس نہیں کر رہی ہے، آج عوام کو دو وقت کی روٹی نہیں مل رہی ہے اور ملک میں تاریخی بے روزگاری اور مہنگائی ہے، عوام تاریخی غربت کا سامنا کر رہی ہے جبکہ کٹھ پتلی وزیراعظم اس سوال کا جوا نہیں دے سکتا ہے کہ پریشان حال اور بے حال عوام کیا کریں گے اور جواب دیتا ہے کہ میں کیا کروں۔ 

بلاول بھٹو نے کہا کہ ہم ملک میں جمہوری نظام بحال کریں گے اور ایوان میں عوام کے مسائل حل کریں گے۔ بلاول زرداری نے سینیٹ الیکشن کے سوال پر کہا کہ خفیہ ووٹنگ عوام اور عوامی نمائندوں کا حق ہے اس کو کسی سے چھیننے نہیں دیں گے اور عوامی نمائندوں کو دبائو ڈالنے والوں کو کسی قسم کا موقع فراہم نہیں کریں گے جبکہ ملک میں حکومت نالائق ہے کورٹس کوئی نالائق نہیں ہے، جب وزیراعظم عدالت جائیں تو انہیں عدالت کہے کہ آئین کے مطابق فیصلے ہوں گے اور آئین میں ترمیم کیلئے پارلیمان کے ذریعے دو تہائی اکثریت کی ضرورت ہے جو حکومت کے پاس نہیں ہے۔ 

انہوں نے کا کہ اگر وزیراعظم کے پاس مسائل کے حل کرنے کا منصوبہ نہیں ہے تو اسے استعفیٰ دے دینا چاہیے، پیپلز پارٹی کے پاس عوام کو ریلیف دینے کا حل ہے، ہم نے پاکستان کو لاوارث نہیں چھوڑا تھا،بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام دیا، افواج کی تنخواہیں بڑھائیں کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ معاشی حالات کیسے بھی ہوں، پاکستان کی عوام کو کھانا کھانا ہے، زراعت کو ترقی دینا ہے اور ہم نے اس کیلئے سبسڈی کو زیادہ اہمیت دی، زراعت کو بحال کیا، کسان کو سبسڈی دی کیونکہ کسان کی معیشت ملے گی تو پاکستان کھائے گا، ہم نے مشکل حالات میں ویلتھ جنریٹ کیا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ لانگ مارچ کیلئے حکمت عملی طے کرنا اور کب کیسے کرنا ہے پی ڈی ایم نے کرنا ہے اور جب لانگ مارچ کیئے نکلیں گے تو لاہور کے عوام ساتھ ہوں گے اور بے روزگار عوام کو ساتھ لے کر چلیں گے۔ حکومت ہر جگہ لوگوں کو بے روزگار کیا ہے، عوام دوائی نہیں خرید سکتی ہے اس لئے ہم عوام کی طاقت کے ساتھ سالام آباد پہنچ کر وزیراعظم سے استعفیٰ چھین کر لیں گے۔ پی ڈی ایم کا حکومت سیکوئی مذاکرات نہیں چل رہا ہے، ہم نے واضح پیغام دیا ہے کہ مذاکرات کا وقت چلا گیا ہے، اب ڈائیلاگ اور بات تب ہو گی جب وزیراعظم استعفیٰ دے گا اور کٹھ پتلی جائے گا کیونکہ عوام اس حکومت کی نالائقی اور نا اہلی کا بوجھ اٹھا رہے ہیں۔ 


ای پیپر