Afghan peace conference postponed due to Taliban non-participation
21 اپریل 2021 (18:13) 2021-04-21

اسلام آباد :ترکی میں ہونے والی   افغان امن کانفرنس ملتوی ہونے پر پاکستان نے اپنا ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ خطے میں امن و استحکام کی بھر پور کوشش کی ہے اور آئندہ بھی اس کی حمایت کرتا رہیگا ۔

تفصیلات کے مطابق انقرہ میں 24 سے 4 مئی تک ہونےو الی امن کانفرنس کو اُس وقت ملتوی کر دیا گیا جب افغان طالبان نے اس کانفرنس میں  شریک نہ ہونے کا اعلان کر دیا ،افغان طالبان نے ترکی میں ہونے والی امن کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کی فی الفور تو کوئی وجہ نہیں بتائی لیکن ترکی کا کہنا ہے کہ افغان طالبان کے بغیر یہ مذاکرات ممکن نہیں ۔

پاکستان نے افغان امن کانفرنس ملتوی ہونے پر اپنے ردعمل میں کہا کہ پاکستان ہمیشہ افغانستان میں پائیدار امن اور استحکام کی کوششیں کرتا رہا ہے ،قطر امن معاہدے میں بھی پاکستان نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور ٹرمپ کے دور اقتدار میں امن معاہدہ کروانے میں کامیاب ہو گئے تھے ۔

ترجمان نے مزید کہا کہ ہمارا موقف ہمیشہ یہ رہا ہے کہ افغان تنازع کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، افغانستان میں امن، استحکام کے لیے ترکی کی کوششوں کو بہت اہمیت دیتے ہیں،ترجمان دفتر خارجہ نے یہ بھی کہا کہ یقین ہے ترکی میں نئی تاریخوں کے بعد افغان قیادت کا اجلاس اہم ہوگا۔

ترجمان کے مطابق اجلاس میں افغان باشندوں کے لیے سیاسی تصفیے کی سمت پیش رفت کا موقع ملے گا، امید ہے افغان فریق جامع سیاسی تصفیے پر کام کا موقع ضائع نہیں کریں گے۔


ای پیپر